Sayings of the Messenger احادیثِ رسول اللہ

 
Donation Request

Sahih Al-Bukhari

Book: Funerals (23)    كتاب الجنائز

1234Last ›

Chapter No: 11

باب مَوَاضِعِ الْوُضُوءِ مِنَ الْمَيِّتِ

(To start with) the parts of the dead body which are washed in ablution.

باب: میّت کاغسل وضو کے مقاموں سے شروع کرنا۔

حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ مُوسَى، حَدَّثَنَا وَكِيعٌ، عَنْ سُفْيَانَ، عَنْ خَالِدٍ الْحَذَّاءِ، عَنْ حَفْصَةَ بِنْتِ سِيرِينَ، عَنْ أُمِّ عَطِيَّةَ ـ رضى الله عنها ـ قَالَتْ لَمَّا غَسَّلْنَا بِنْتَ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ لَنَا وَنَحْنُ نَغْسِلُهَا ‏"‏ ابْدَأْنَ بِمَيَامِنِهَا وَمَوَاضِعِ الْوُضُوءِ ‏"‏‏

Narrated By Um 'Atiyya : When we washed the deceased daughter of the Prophet, he said to us, while we were washing her, "Start the bath from the right side and from the parts which are washed in ablution."

حضرت ام عطیہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ انہوں نے کہا: ہم نے جب نبی ﷺ کی صاحبزادی کو نہلایا، ہم نہلا رہے تھے کہ آپﷺ نے فرمایا دائیں طرف سے اور وضو کے مقاموں سےغسل شروع کرو۔

Chapter No: 12

باب هَلْ تُكَفَّنُ الْمَرْأَةُ فِي إِزَارِ الرَّجُلِ

Can a woman be shrouded in the waist-sheet of a man?

باب: کیا عورت کے کفن میں مرد کا ازاربند شریک ہو سکتا ہے؟

حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّحْمَنِ بْنُ حَمَّادٍ، أَخْبَرَنَا ابْنُ عَوْنٍ، عَنْ مُحَمَّدٍ، عَنْ أُمِّ عَطِيَّةَ، قَالَتْ تُوُفِّيَتْ بِنْتُ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَقَالَ لَنَا ‏"‏ اغْسِلْنَهَا ثَلاَثًا أَوْ خَمْسًا أَوْ أَكْثَرَ مِنْ ذَلِكَ إِنْ رَأَيْتُنَّ، فَإِذَا فَرَغْتُنَّ فَآذِنَّنِي ‏"‏‏.‏ فَلَمَّا فَرَغْنَا آذَنَّاهُ فَنَزَعَ مِنْ حِقْوِهِ إِزَارَهُ وَقَالَ ‏"‏ أَشْعِرْنَهَا إِيَّاهُ ‏"‏‏

Narrated By Um 'Atiyya : The daughter of the Prophet expired, and he said to us, "Wash her three or five times, or more if you see it necessary, and when you finish, notify me." So, (when we finished) we informed him and he unfastened his waist-sheet and told us to shroud her in it.

حضرت امّ عطیہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہےکہ انہوں نے کہا: نبیﷺ کی ایک صاحبزادی فوت ہوگئی آپﷺ نے فرمایا: اس کو تین بار نہلاؤ یا ضرورت سمجھو تو پانچ بار یا اس سے زیادہ۔پھر جب نہلا کے فارغ ہوجاؤ تو مجھ کو بتادینا۔ ہم جب نہلا چکے تو آپﷺ کو خبر کی، آپﷺ نے اپنا حقوہ یعنی تہبند اتارکر دے دیا اور فرمایا: اس کے اندر لپیٹ دو۔

Chapter No: 13

باب يَجْعَلُ الْكَافُورَ فِي آخِرِهِ

To sprinkle camphor on the dead body as the last thing (before shrouding).

باب: اخیر بار کے غسل میں کافور شریک کرنا ۔

حَدَّثَنَا حَامِدُ بْنُ عُمَرَ، حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ زَيْدٍ، عَنْ أَيُّوبَ، عَنْ مُحَمَّدٍ، عَنْ أُمِّ عَطِيَّةَ، قَالَتْ تُوُفِّيَتْ إِحْدَى بَنَاتِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَخَرَجَ، فَقَالَ ‏"‏ اغْسِلْنَهَا ثَلاَثًا أَوْ خَمْسًا أَوْ أَكْثَرَ مِنْ ذَلِكَ إِنْ رَأَيْتُنَّ بِمَاءٍ وَسِدْرٍ، وَاجْعَلْنَ فِي الآخِرَةِ كَافُورًا أَوْ شَيْئًا مِنْ كَافُورٍ، فَإِذَا فَرَغْتُنَّ فَآذِنَّنِي ‏"‏‏.‏ قَالَتْ فَلَمَّا فَرَغْنَا آذَنَّاهُ، فَأَلْقَى إِلَيْنَا حِقْوَهُ فَقَالَ ‏"‏ أَشْعِرْنَهَا إِيَّاهُ ‏"وَعَنْ أَيُّوبَ، عَنْ حَفْصَةَ، عَنْ أُمِّ عَطِيَّةَ رضى الله عنهمابِنَحْوِهِ

Narrated By Muhammad : Um 'Atiyya said, "One of the daughters of the Prophet died and he came out and said, 'Wash her three or five times or more, if you think it necessary, with water and Sidr, and last of all put camphor (or some camphor) and when you finish, inform me.' " Um Atiyya added, "When we finished we informed him and he gave us his waist-sheet and said, 'Shroud her in it.'"

حضرت ام عطیہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ انہوں نے کہا:نبیﷺ کی ایک صاحبزادی فوت ہوگئیں تو نبی ﷺ باہر تشریف لائے اور فرمایا: اس کو تین بار اگر مناسب سمجھو تو پانچ بار یا اس سے بھی زیادہ پانی اور بیری کے پتّوں سے نہلاؤ اور آخر میں کافور یا تھوڑا کافور استعمال کرو۔جب نہلا کے فارغ ہوجاؤ تو مجھے اطلاع دینا۔حضرت ام عطیہ رضی اللہ عنہا نے کہا: جب ہم نہلاکے فارغ ہوئے تو ہم نے آپﷺ کو خبرکردی۔آپﷺنے اپنا تہبند ہمیں دے اور فرمایا: اسے اندر جسم پر لپیٹ دو۔


وَقَالَتْ إِنَّهُ قَالَ ‏"‏ اغْسِلْنَهَا ثَلاَثًا أَوْ خَمْسًا أَوْ سَبْعًا أَوْ أَكْثَرَ مِنْ ذَلِكَ إِنْ رَأَيْتُنَّ ‏"‏‏.‏ قَالَتْ حَفْصَةُ قَالَتْ أُمُّ عَطِيَّةَ ـ رضى الله عنها ـ وَجَعَلْنَا رَأْسَهَا ثَلاَثَةَ قُرُونٍ

And Um 'Atiyya (in another narration) added, "The Prophet said, 'Wash her three, five or seven times or more, if you think it necessary.'" Hafsa said that Um 'Atiyya had also said, "We entwined her hair into three braids."

حضرت ام عطیہ رضی اللہ عنہا نے کہا: اس میں یہ ہے کہ آپﷺنے فرمایا:تین یا پانچ یا سات بار یا اس سے بھی زیادہ اگر مناسب سمجھو تو نہلاؤ۔حفصہ نے کہا امِّ عطیہ رضی اللہ عنہا نے کہا: ہم نے ان کے سر کے بالوں کی تین لٹوں میں تقسیم کردیئے تھے۔

Chapter No: 14

باب نَقْضِ شَعَرِ الْمَرْأَةِ

To undo the hair of a (dead) female.

باب: میّت اگر عورت کی ہو تو غسل کے وقت اس کے بال کھولنا

وَقَالَ ابْنُ سِيرِينَ لاَ بَأْسَ أَنْ يُنْقَضَ شَعَرُ الْمَيِّتِ

And Ibn Sirin said , “There is no harm in undoing the hair of a (dead) female”

اور ابنِ سیرین نے کہا کہ عورت کے بال کھولنا کچھ برا نہیں۔

حَدَّثَنَا أَحْمَدُ، حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ وَهْبٍ، أَخْبَرَنَا ابْنُ جُرَيْجٍ، قَالَ أَيُّوبُ وَسَمِعْتُ حَفْصَةَ بِنْتَ سِيرِينَ، قَالَتْ حَدَّثَتْنَا أُمُّ عَطِيَّةَ ـ رضى الله عنها ـ أَنَّهُنَّ جَعَلْنَ رَأْسَ بِنْتِ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ثَلاَثَةَ قُرُونٍ نَقَضْنَهُ ثُمَّ غَسَلْنَهُ ثُمَّ جَعَلْنَهُ ثَلاَثَةَ قُرُونٍ‏

Narrated By Hafsa binte Sirin: Um 'Atiyya said that they had entwined the hair of the daughter of Allah's Apostle in three braids. They first undid her hair, washed and then entwined it in three braids."

حضرت امّ عطیہ رضی اللہ عنہا نے بیان کیا کہ عورتوں نے رسول اللہﷺ کی صاحبزادی کے بالوں کو تین لٹوں میں تقسیم کردیا۔ پہلے بال کھولے گئے،پھر انہیں دھوکر ان کی تین چوٹیاں کردی گئیں۔

Chapter No: 15

باب كَيْفَ الإِشْعَارُ لِلْمَيِّتِ

How to shroud a dead body.

باب: میّت پر کپڑا کیونکر لپیٹنا چاہئیے

وَقَالَ الْحَسَنُ الْخِرْقَةُ الْخَامِسَةُ تَشُدُّ بِهَا الْفَخِذَيْنِ وَالْوَرِكَيْنِ تَحْتَ الدِّرْعِ‏

And Al-Hasan said, "The fifth piece of cloth is for tying the thighs and hips and it should be outside the shroud"

امام حسن بصریؒ نے کہا عورت کے لیے ایک پانچواں کپڑا چاہئیے جس سے قمیض کے تلے رانیں اور سرین باندھے جائیں۔

حَدَّثَنَا أَحْمَدُ، حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ وَهْبٍ، أَخْبَرَنَا ابْنُ جُرَيْجٍ، أَنَّ أَيُّوبَ، أَخْبَرَهُ قَالَ سَمِعْتُ ابْنَ سِيرِينَ، يَقُولُ جَاءَتْ أُمُّ عَطِيَّةَ ـ رضى الله عنها ـ امْرَأَةٌ مِنَ الأَنْصَارِ مِنَ اللاَّتِي بَايَعْنَ، قَدِمَتِ الْبِصْرَةَ، تُبَادِرُ ابْنًا لَهَا فَلَمْ تُدْرِكْهُ ـ فَحَدَّثَتْنَا قَالَتْ دَخَلَ عَلَيْنَا النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم وَنَحْنُ نَغْسِلُ ابْنَتَهُ فَقَالَ ‏"‏ اغْسِلْنَهَا ثَلاَثًا أَوْ خَمْسًا أَوْ أَكْثَرَ مِنْ ذَلِكَ إِنْ رَأَيْتُنَّ ذَلِكَ بِمَاءٍ وَسِدْرٍ، وَاجْعَلْنَ فِي الآخِرَةِ كَافُورًا، فَإِذَا فَرَغْتُنَّ فَآذِنَّنِي ‏"‏‏.‏ قَالَتْ فَلَمَّا فَرَغْنَا أَلْقَى إِلَيْنَا حَقْوَهُ فَقَالَ ‏"‏ أَشْعِرْنَهَا إِيَّاهُ ‏"‏‏.‏ وَلَمْ يَزِدْ عَلَى ذَلِكَ، وَلاَ أَدْرِي أَىُّ بَنَاتِهِ‏.‏ وَزَعَمَ أَنَّ الإِشْعَارَ الْفُفْنَهَا فِيهِ، وَكَذَلِكَ كَانَ ابْنُ سِيرِينَ يَأْمُرُ بِالْمَرْأَةِ أَنْ تُشْعَرَ وَلاَ تُؤْزَرَ‏

Narrated By Ibn Sirin : Um 'Atiyya (an Ansari woman who gave the pledge of allegiance to the Prophet) came to Basra to visit her son, but she could not find him. She narrated to us, "The Prophet came to us while we were giving bath to his (dead) daughter, he said: 'Wash her three times, five times or more, if you think it necessary, with water and Sidr, and last of all put camphor, and when you finish, notify me.' " Um 'Atiyya added, "After finishing, we informed him and he gave us his waist sheet and told us to shroud her in it and did not say more than that."

ابن سیرین سے روایت ہے کہ اُم عطیہ رضی اللہ عنہا انصار کی ان عورتوں میں سے تھی جنہوں نےآپﷺ سے بیعت کی تھی۔ وہ جلدی جلدی اپنے بیٹے کو دیکھنے کے لئے بصرہ میں آئی لیکن اس کو نہ پاسکی (وہ پہلے ہی مرگیا یا چلاگیا) انہوں نے بیان کیا کہ نبیﷺ ہمارے پاس تشریف لائے ہم آپﷺ کی صاحبزادی کو نہلارہے تھے۔آپﷺ نے فرمایا: تین مرتبہ یا پانچ مرتبہ یا اس سے زیادہ مرتبہ اگر مناسب سمجھو پانی اور بیری سے اس کو نہلاؤ اور آخر میں کافور بھی استعمال کرو۔جب نہلانے سے فارغ ہوجاؤ تو مجھے اطلاع دے دینا۔حضرت ام عطیہ رضی اللہ عنہا نے کہا: ہم نے نہلاکر آپﷺ کو اطلاع دی، آپﷺ نے اپنا تہبند دے کر فرمایا: اس کو اندر بدن سے لپیٹ دو۔اس سے زیادہ آپﷺنے کچھ نہیں فرمایا۔ مجھے یہ بھی معلوم نہیں کہ یہ آپﷺکی کونسی بیٹی تھی؟ایوب نے کہا: اشعار کا مطلب یہ ہے کہ اس میں نعش لپیٹ دی جائے، اور ابن سیرین بھی عورت کےلیے یہ حکم دیتے تھے کہ اس کے بدن پر کپڑا لپیٹ دیا جائے تہبند نہ پہنایا جائے۔

Chapter No: 16

باب هَلْ يُجْعَلُ شَعَرُ الْمَرْأَةِ ثَلاَثَةَ قُرُونٍ

To entwine the head-hair of a (dead) woman in three braids.

باب: عورت کے بالوں کی تین لٹیں کی جائیں۔

حَدَّثَنَا قَبِيصَةُ، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، عَنْ هِشَامٍ، عَنْ أُمِّ الْهُذَيْلِ، عَنْ أُمِّ عَطِيَّةَ ـ رضى الله عنها ـ قَالَتْ ضَفَرْنَا شَعَرَ بِنْتِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم‏.‏ تَعْنِي ثَلاَثَةَ قُرُونٍ‏.‏ وَقَالَ وَكِيعٌ قَالَ سُفْيَانُ نَاصِيَتَهَا وَقَرْنَيْهَا‏

Narrated By Um 'Atiyya : We entwined the hair of the dead daughter of the Prophet into three braids. Waki said that Sufyan said, "One braid was entwined in front and the other two were entwined on the sides of the head."

حضرت ام عطیہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے انہوں نے کہا: نبیﷺکی صاحبزادی کے بال گوندھ کر ان کی تین چوٹیاں کردیں اور وکیع نے سفیان سے یوں روایت کیا کہ ایک پیشانی کی طرف بالوں کی چوٹی اور دو اِدھر اُدھر کے بالوں کی۔

Chapter No: 17

باب يُلْقَى شَعَرُ الْمَرْأَةِ خَلْفَهَا

To make the hair of a (dead) woman fall at her back.

باب:عورت کے بالوں کی تین لٹیں کر کے اس کے پیچھے ڈال دی جائیں۔

حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ، حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ سَعِيدٍ، عَنْ هِشَامِ بْنِ حَسَّانَ، قَالَ حَدَّثَتْنَا حَفْصَةُ، عَنْ أُمِّ عَطِيَّةَ ـ رضى الله عنها ـ قَالَتْ تُوُفِّيَتْ إِحْدَى بَنَاتِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَأَتَانَا النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم فَقَالَ ‏"‏ اغْسِلْنَهَا بِالسِّدْرِ وِتْرًا ثَلاَثًا أَوْ خَمْسًا أَوْ أَكْثَرَ مِنْ ذَلِكَ إِنْ رَأَيْتُنَّ ذَلِكَ، وَاجْعَلْنَ فِي الآخِرَةِ كَافُورًا أَوْ شَيْئًا مِنْ كَافُورٍ، فَإِذَا فَرَغْتُنَّ فَآذِنَّنِي ‏"‏‏.‏ فَلَمَّا فَرَغْنَا آذَنَّاهُ، فَأَلْقَى إِلَيْنَا حِقْوَهُ، فَضَفَرْنَا شَعَرَهَا ثَلاَثَةَ قُرُونٍ وَأَلْقَيْنَاهَا خَلْفَهَا‏

Narrated By Um 'Atiyya : One of the daughters of the Prophet expired and he came to us and said, "Wash her with Sidr (water) for odd number of times, i.e. three, five or more, if you think it necessary, and in the last, put camphor or (some camphor on her), and when you finish, notify me." So when we finished we informed him. He gave his waist-sheet to us (to shroud her). We entwined the hair (of the deceased girl) in three braids and made them fall at her back.

حضرت ام عطیہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے انہوں نے کہا: نبی ﷺ کی ایک صاحبزادی کا انتقال ہوگیا تو آپﷺ ہمارے پاس آئے اور فرمانے لگے ان کو بیری کے پتوں سے طاق بار نہلاؤ، تین بار یا پانچ بار یا اس سے زیادہ، اگر مناسب سمجھو اور آخر میں کافور، یا یوں فرمایا تھوڑی سی کافور بھی استعمال کرو۔ جب نہلاکے فارغ ہوجاؤ تو مجھے اطلاع دینا۔ چنانچہ ہم نے نہلانے کے بعد آپﷺ کو اطلاع دی، آپﷺ نے اپنا تہبند عنایت کیا۔ ہم نے ان کے بالوں کی تین چوٹیاں بناکر ان کی پیٹھ کے پیچھے ڈال دیں۔

Chapter No: 18

باب الثِّيَابِ الْبِيضِ لِلْكَفَنِ

White cloth for the shroud.

باب: سفید کپڑوں کا کفن کرنا۔

حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ مُقَاتِلٍ، أَخْبَرَنَا عَبْدُ اللَّهِ، أَخْبَرَنَا هِشَامُ بْنُ عُرْوَةَ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ عَائِشَةَ ـ رضى الله عنها ـ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم كُفِّنَ فِي ثَلاَثَةِ أَثْوَابٍ يَمَانِيَةٍ بِيضٍ سَحُولِيَّةٍ مِنْ كُرْسُفٍ، لَيْسَ فِيهِنَّ قَمِيصٌ وَلاَ عِمَامَةٌ‏

Narrated By 'Aisha : Allah's Apostle was shrouded in three Yemenite white Suhuliya (pieces of cloth) of cotton, and in them there was neither a shirt nor a turban."

حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ رسول اللہﷺکو یمن کے تین سفید سوتی دھلے ہوئے کپڑوں میں کفن دیا گیا ان میں نہ قمیص تھی نہ عمامہ۔

Chapter No: 19

باب الْكَفَنِ فِي ثَوْبَيْنِ

Shrouding in two pieces of cloth.

باب: دو کپڑوں میں کفن دینا۔

حَدَّثَنَا أَبُو النُّعْمَانِ، حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ زَيْدٍ، عَنْ أَيُّوبَ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ جُبَيْرٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهم ـ قَالَ بَيْنَمَا رَجُلٌ وَاقِفٌ بِعَرَفَةَ إِذْ وَقَعَ عَنْ رَاحِلَتِهِ فَوَقَصَتْهُ ـ أَوْ قَالَ فَأَوْقَصَتْهُ ـ قَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ اغْسِلُوهُ بِمَاءٍ وَسِدْرٍ، وَكَفِّنُوهُ فِي ثَوْبَيْنِ، وَلاَ تُحَنِّطُوهُ وَلاَ تُخَمِّرُوا رَأْسَهُ، فَإِنَّهُ يُبْعَثُ يَوْمَ الْقِيَامَةِ مُلَبِّيًا ‏"‏‏

Narrated By Ibn Abbas : While a man was riding (his Mount) in 'Arafat, he fell down from it (his Mount) and broke his neck (and died). The Prophet said, "Wash him with water and Sidr and shroud him in two pieces of cloth, and neither perfume him, nor cover his head, for he will be resurrected on the Day of Resurrection saying, 'Labbaik,' (i.e. like a pilgrim)."

حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ نے بیان کیا کہ ایک آدمی میدان عرفہ میں کھڑا ہوا تھا کہ اپنی سواری سے گر پڑا اور سواری نے انہیں کچل دیا۔ نبی ﷺنے ان کےلیے فرمایا: کہ پانی اور بیری کے پتوں سے غسل دے کر کپڑوں میں انہیں کفن دو اور یہ بھی ہدایت فرمائی کہ انہیں خوشبو نہ لگاؤ اور نہ ان کا سر چھپاؤ ، کیونکہ یہ قیامت کے دن لبیک کہتا ہوا اٹھے گا۔

Chapter No: 20

باب الْحَنُوطِ لِلْمَيِّتِ

The perfuming of a dead body with Hanut (a kind of perfume).

باب: میّت کو خوشبو لگانا۔

حَدَّثَنَا قُتَيْبَةُ، حَدَّثَنَا حَمَّادٌ، عَنْ أَيُّوبَ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ جُبَيْرٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ بَيْنَمَا رَجُلٌ وَاقِفٌ مَعَ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم بِعَرَفَةَ إِذْ وَقَعَ مِنْ رَاحِلَتِهِ فَأَقْصَعَتْهُ ـ أَوْ قَالَ فَأَقْعَصَتْهُ ـ فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ اغْسِلُوهُ بِمَاءٍ وَسِدْرٍ، وَكَفِّنُوهُ فِي ثَوْبَيْنِ، وَلاَ تُحَنِّطُوهُ وَلاَ تُخَمِّرُوا رَأْسَهُ، فَإِنَّ اللَّهَ يَبْعَثُهُ يَوْمَ الْقِيَامَةِ مُلَبِّيًا ‏"‏‏

Narrated By Ibn Abbas: While a man was at 'Arafat (for Hajj) with Allah's Apostle He fell down from his Mount and broke his neck (and died). So Allah's Apostle said, "Wash him with water and Sidr and shroud him in two pieces of cloth and neither perfume him nor cover his head, for Allah will resurrect him on the Day of Resurrection and he will be saying 'Labbaik."

حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ نے بیان کیا کہ ایک آدمی نبی ﷺکے ساتھ میدان عرفہ میں وقوف کئے ہوئے تھا کہ وہ اپنے اونٹ سے گر پڑا اور اونٹ نے انہیں کچل دیا۔ رسو ل اللہﷺنے فرمایا: انہیں پانی اور بیری کے پتوں سے غسل دے کر دو کپڑوں کا کفن دو، خوشبو نہ لگاؤ اور نہ سر ڈھکو کیونکہ اللہ تعالیٰ قیامت کے دن انہیں لبیک کہتے ہوئے اٹھائے گا۔

1234Last ›