Sayings of the Messenger

 

123

Chapter No: 1

بابُ اسْتِحْبَابِ النِّكَاحِ لِمَنْ تَاقَتْ نَفْسُهُ إِلَيْهِ وَوَجَدَ مُؤْنَةً وَاشْتِغَالِ مَنْ عَجَزَ عَنِ الْمُؤَنِ بِالصَّوْمِ

It is recommended to get married for the one who has its desire and can afford it, and the one who cannot afford it should (divert himself and) engage in fasting

صاحب استطاعت کے لیے نکاح کرنے کا استحباب، اور جو اس کی طاقت نہیں رکھتا اس کو روزوں کے ساتھ مشغول رہنے کا استحباب

حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ يَحْيَى التَّمِيمِىُّ وَأَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ وَمُحَمَّدُ بْنُ الْعَلاَءِ الْهَمْدَانِىُّ جَمِيعًا عَنْ أَبِى مُعَاوِيَةَ - وَاللَّفْظُ لِيَحْيَى أَخْبَرَنَا أَبُو مُعَاوِيَةَ - عَنِ الأَعْمَشِ عَنْ إِبْرَاهِيمَ عَنْ عَلْقَمَةَ قَالَ كُنْتُ أَمْشِى مَعَ عَبْدِ اللَّهِ بِمِنًى فَلَقِيَهُ عُثْمَانُ فَقَامَ مَعَهُ يُحَدِّثُهُ فَقَالَ لَهُ عُثْمَانُ يَا أَبَا عَبْدِ الرَّحْمَنِ أَلاَ نُزَوِّجُكَ جَارِيَةً شَابَّةً لَعَلَّهَا تُذَكِّرُكَ بَعْضَ مَا مَضَى مِنْ زَمَانِكَ. قَالَ فَقَالَ عَبْدُ اللَّهِ لَئِنْ قُلْتَ ذَاكَ لَقَدْ قَالَ لَنَا رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- « يَا مَعْشَرَ الشَّبَابِ مَنِ اسْتَطَاعَ مِنْكُمُ الْبَاءَةَ فَلْيَتَزَوَّجْ فَإِنَّهُ أَغَضُّ لِلْبَصَرِ وَأَحْصَنُ لِلْفَرْجِ وَمَنْ لَمْ يَسْتَطِعْ فَعَلَيْهِ بِالصَّوْمِ فَإِنَّهُ لَهُ وِجَاءٌ ».

It was narrated that 'Alqamah said: "I was walking with Abdullah in Mina when he was met by Uthman. He stood and talked with him and Uthman said to him: 'O Abu Abdur-ur-Rahman, shall we not marry you to a young girl who can remind you of the times past?' Abdullah said, 'If that is what you are telling me, (let me tell you that) the Messenger of Allah (s.a.w) said to us: O young men, whoever among you can afford it, let him get married, for it is more effective in lowering the gaze and guarding one's chastity. And whoever cannot afford it should fast, for it will be a shield for him.' "

علقمہ کہتے ہیں کہ میں حضرت عبد اللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ کے ساتھ منی میں جارہا تھا کہ ان کی ملاقات حضرت عثمان رضی اللہ عنہ سے ہوئی، حضرت ابن مسعود رضی اللہ عنہ حضرت عثمان رضی اللہ عنہ سے کھڑے ہوکر باتیں کرنے لگے ، حضرت عثمان رضی اللہ عنہ نے کہا اے ابو عبد الرحمن! (ابن مسعود کی کنیت) کیا تمہاری شادی ایک ایسی نوجوان لڑکی سے نہ کریں جو آپ کو ماضی کے دنوں کی یاد دلادے ، حضرت ابن مسعود رضی اللہ عنہ نے کہا : اگر تم یہ کہتے ہوتو رسول اللہﷺنے ہمیں یہ فرمایا: اے جوانو!تم میں جو شخص گھر بسانے کی طاقت رکھتا ہے وہ نکاح کرلے ، کیونکہ نکاح سے آنکھوں میں حیاء آتی ہے اور شرمگاہ گناہوں سے محفوظ رہتی ہے اور جو شخص نکاح کی استطاعت نہیں رکھتا وہ روزے رکھے ، کیونکہ روزے شہوت کو توڑ دیتے ہیں۔


حَدَّثَنَا عُثْمَانُ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا جَرِيرٌ عَنِ الأَعْمَشِ عَنْ إِبْرَاهِيمَ عَنْ عَلْقَمَةَ قَالَ إِنِّى لأَمْشِى مَعَ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ مَسْعُودٍ بِمِنًى إِذْ لَقِيَهُ عُثْمَانُ بْنُ عَفَّانَ فَقَالَ هَلُمَّ يَا أَبَا عَبْدِ الرَّحْمَنِ قَالَ فَاسْتَخْلاَهُ فَلَمَّا رَأَى عَبْدُ اللَّهِ أَنْ لَيْسَتْ لَهُ حَاجَةٌ - قَالَ - قَالَ لِى تَعَالَ يَا عَلْقَمَةُ - قَالَ - فَجِئْتُ فَقَالَ لَهُ عُثْمَانُ أَلاَ نُزَوِّجُكَ يَا أَبَا عَبْدِ الرَّحْمَنِ جَارِيَةً بِكْرًا لَعَلَّهُ يَرْجِعُ إِلَيْكَ مِنْ نَفْسِكَ مَا كُنْتَ تَعْهَدُ فَقَالَ عَبْدُ اللَّهِ لَئِنْ قُلْتَ ذَاكَ. فَذَكَرَ بِمِثْلِ حَدِيثِ أَبِى مُعَاوِيَةَ.

It was narrated that 'Alqamah said: "I was walking with Abdullah bin Mas'ud in Mina when he was met by Uthman bin Affan who said: 'Come here, O Abu Abdur Rahman,' He took him aside, and when Abdullah saw that there was no need for that, he said to me: 'Come here, O 'Alqamah,' So I came. Uthman said to him: 'Shall we not marry you, O Abu Abdur Rahman, to a young virgin hoping that you might regain some of that which you had in the past?' Abdullah said: 'If you are telling me that..."" and he mentioned a Hadith similar to that of Abu Mu'awiyah (no.3398).

علقمہ کہتے ہیں کہ میں حضرت عبد اللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ کے ساتھ منی جارہا تھا کہ راستے میں ان کی ملاقات حضرت عثمان رضی اللہ عنہ سے ہوئی، تو حضرت عثمان نے فرمایا : اے ابوعبدالرحمن! ادھر آؤ ، اور ان کو خلوت میں لے گئے ،جب حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ نہ نے دیکھا کہ حضرت عثمان رضی اللہ تعالیٰ عنہ کو کوئی خاص کام نہیں ہے تو انہوں نے مجھ سے فرمایا : اے علقمہ! تم بھی آجاؤ ، سو میں بھی آگیا تو حضرت عثمان نے حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے فرمایا: اے ابوعبدالرحمن !کیا ہم تمہارا نکاح نوجوان کنواری لڑکی سے نہ کرا دیں تاکہ گزرے ہوئے زمانے کی یاد پھر تازہ ہو جائے تو حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے فرمایا : اگر آپ یہ کہتے ہیں آگے حدیث مذکورہ بالا حدیث کی طرح ہے۔


حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ وَأَبُو كُرَيْبٍ قَالاَ حَدَّثَنَا أَبُو مُعَاوِيَةَ عَنِ الأَعْمَشِ عَنْ عُمَارَةَ بْنِ عُمَيْرٍ عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ يَزِيدَ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ قَالَ قَالَ لَنَا رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- « يَا مَعْشَرَ الشَّبَابِ مَنِ اسْتَطَاعَ مِنْكُمُ الْبَاءَةَ فَلْيَتَزَوَّجْ فَإِنَّهُ أَغَضُّ لِلْبَصَرِ وَأَحْصَنُ لِلْفَرْجِ وَمَنْ لَمْ يَسْتَطِعْ فَعَلَيْهِ بِالصَّوْمِ فَإِنَّهُ لَهُ وِجَاءٌ ».

It was narrated that 'Abdullah said: The Messenger of Allah (s.a.w) said to us: "O young men, whoever among you can afford it, let him get married, for it is more effective in lowering the gaze and guarding one's chastity. And whoever cannot afford it, let him fast, for it will be a shield for him."

حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے وہ فرماتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺنے ہمیں فرمایا : اے نوجوانوں کی جماعت! جو تم میں سے نکاح کرنے کی طاقت رکھتا ہو وہ نکاح کر لے کیونکہ نکاح سے آنکھوں میں حیاء آتی ہے ، اور شرمگاہ گناہوں سے محفوظ رہتی ہے ، اور جو نکاح کرنے کی طاقت نہ رکھتا ہو وہ روزے رکھے کیونکہ روزوں سے شہوت ٹوٹتی ہے۔


حَدَّثَنَا عُثْمَانُ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا جَرِيرٌ عَنِ الأَعْمَشِ عَنْ عُمَارَةَ بْنِ عُمَيْرٍ عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ يَزِيدَ قَالَ دَخَلْتُ أَنَا وَعَمِّى عَلْقَمَةُ وَالأَسْوَدُ عَلَى عَبْدِ اللَّهِ بْنِ مَسْعُودٍ قَالَ وَأَنَا شَابٌّ يَوْمَئِذٍ فَذَكَرَ حَدِيثًا رُئِيتُ أَنَّهُ حَدَّثَ بِهِ مِنْ أَجْلِى قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم-. بِمِثْلِ حَدِيثِ أَبِى مُعَاوِيَةَ وَزَادَ قَالَ فَلَمْ أَلْبَثْ حَتَّى تَزَوَّجْتُ.

It was narrated that 'Abdur-Rahman bin Yazid said: "My paternal uncle 'Alqamah, Al-Aswad and I entered upon 'Abdullah bin Mas'ud who said: 'I was a young man in those days,' and he narrated a Hadith which he seemed to narrate for my sake. He said: 'The Messenger of Allah (s.a.w) said ..."' a Hadith like that of Abu Mu'awiyah (no. 3398), and he added: "'It was not long before I got married."'

عبد الرحمن بن یزید کہتے ہیں کہ میں اور میرے چچا علقمہ اور اسود حضرت عبد اللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ کے پاس گئے ، میں ان دنوں میں نوجوان تھا ، حضرت ابن مسعود رضی اللہ عنہ نے ایک حدیث بیان کی اور میرا خیال ہے کہ وہ حدیث انہوں نے میری وجہ سے بیان کی ، اور وہ حدیث مذکورہ بالا حدیث کی طرح ہے اور اس میں مزید یہ ہے کہ میں نے بغیر تاخیر شادی کرلی۔


حَدَّثَنَا عُثْمَانُ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا جَرِيرٌ عَنِ الأَعْمَشِ عَنْ عُمَارَةَ بْنِ عُمَيْرٍ عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ يَزِيدَ قَالَ دَخَلْتُ أَنَا وَعَمِّى عَلْقَمَةُ وَالأَسْوَدُ عَلَى عَبْدِ اللَّهِ بْنِ مَسْعُودٍ قَالَ وَأَنَا شَابٌّ يَوْمَئِذٍ فَذَكَرَ حَدِيثًا رُئِيتُ أَنَّهُ حَدَّثَ بِهِ مِنْ أَجْلِى قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم-. بِمِثْلِ حَدِيثِ أَبِى مُعَاوِيَةَ وَزَادَ قَالَ فَلَمْ أَلْبَثْ حَتَّى تَزَوَّجْتُ.

It was narrated that 'Abdullah said: "We entered upon him and I was the youngest of the people..." a Hadith like theirs (no. 3401), but he did not mention (the phrase): "It was not long before I got married."

عبد الرحمن بن یزید کہتے ہیں کہ میں اور میرے چچا علقمہ اور اسود حضرت عبد اللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ کے پاس گئے ، میں ان دنوں میں نوجوان تھا ، حضرت ابن مسعود رضی اللہ عنہ نے ایک حدیث بیان کی اور میرا خیال ہے کہ وہ حدیث انہوں نے میری وجہ سے بیان کی ، اور وہ حدیث مذکورہ بالا حدیث کی طرح ہے اور اس میں مزید یہ ہے کہ میں نے بغیر تاخیر شادی کرلی۔


وَحَدَّثَنِى أَبُو بَكْرِ بْنُ نَافِعٍ الْعَبْدِىُّ حَدَّثَنَا بَهْزٌ حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ سَلَمَةَ عَنْ ثَابِتٍ عَنْ أَنَسٍ أَنَّ نَفَرًا مِنْ أَصْحَابِ النَّبِىِّ -صلى الله عليه وسلم- سَأَلُوا أَزْوَاجَ النَّبِىِّ -صلى الله عليه وسلم- عَنْ عَمَلِهِ فِى السِّرِّ فَقَالَ بَعْضُهُمْ لاَ أَتَزَوَّجُ النِّسَاءَ. وَقَالَ بَعْضُهُمْ لاَ آكُلُ اللَّحْمَ. وَقَالَ بَعْضُهُمْ لاَ أَنَامُ عَلَى فِرَاشٍ. فَحَمِدَ اللَّهَ وَأَثْنَى عَلَيْهِ. فَقَالَ « مَا بَالُ أَقْوَامٍ قَالُوا كَذَا وَكَذَا لَكِنِّى أُصَلِّى وَأَنَامُ وَأَصُومُ وَأُفْطِرُ وَأَتَزَوَّجُ النِّسَاءَ فَمَنْ رَغِبَ عَنْ سُنَّتِى فَلَيْسَ مِنِّى ».

It was narrated from Anas that a group of Companions of the Prophet asked the wives of the Prophet (s.a.w) about what he did in private. One of them said: "I will not marry women." Another said: "I will not eat meat." Another said: "I will not sleep in a bed." He (the Prophet s.a.w) praised and extolled Allah, then he said: 'What is the matter with people who say such and such? I pray and I sleep, I fast and I break the fast, and I marry women. Whoever turns away from my Sunnah is not of me."'

حضرت انس رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ آپ ﷺکے چند صحابہ ازواج النبی ﷺکے پاس گئے اور آپﷺکی خلوت کے اعمال معلوم کیے ، پھر ان میں سے ایک نے کہا : میں عورتوں سے شادی نہیں کروں گا ، اور دوسرے نے کہا: میں گوشت نہیں کھاؤں گا ، تیسرے نے کہا: میں بستر پر آرام نہیں کروں گا، (یہ سن کر ) آپ ﷺنے اللہ کی حمد وثناء بیان کی اور فرمایا : ان لوگوں کا کیا حال ہے جنہوں نے اس طرح اس طرح کہا،میں نماز پڑھتا ہوں اور آرام بھی کرتا ہوں، روزہ بھی رکھتا ہوں اور افطار بھی کرتا ہوں ،اور میں عورتوں سے شادی بھی کرتا ہوں ، جو شخص میری سنت سے اعراض کرے گا وہ میرے طریقے پر نہیں ہے۔


وَحَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ الْمُبَارَكِ ح وَحَدَّثَنَا أَبُو كُرَيْبٍ مُحَمَّدُ بْنُ الْعَلاَءِ - وَاللَّفْظُ لَهُ - أَخْبَرَنَا ابْنُ الْمُبَارَكِ عَنْ مَعْمَرٍ عَنِ الزُّهْرِىِّ عَنْ سَعِيدِ بْنِ الْمُسَيَّبِ عَنْ سَعْدِ بْنِ أَبِى وَقَّاصٍ قَالَ رَدَّ رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- عَلَى عُثْمَانَ بْنِ مَظْعُونٍ التَّبَتُّلَ وَلَوْ أَذِنَ لَهُ لاَخْتَصَيْنَا.

It was narrated that Sa'd bin Abi Waqqas said' "The Messenger of Allah (s.a.w) forbade 'Uthman bin Maz'ud to be celibate. If he had given him permission, we would have gotten ourselves castrated."

حضرت سعد بن ابی وقاص رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے عثمان بن مظعون رضی اللہ عنہ کو تبتل سے روک دیا (یعنی بغیر شادی کے رہنے سے) اور اگر آپﷺ ان کو اس کی اجازت دے دیتے تو ہم سب خصی ہوجاتے۔


وَحَدَّثَنِى أَبُو عِمْرَانَ مُحَمَّدُ بْنُ جَعْفَرِ بْنِ زِيَادٍ حَدَّثَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ سَعْدٍ عَنِ ابْنِ شِهَابٍ الزُّهْرِىِّ عَنْ سَعِيدِ بْنِ الْمُسَيَّبِ قَالَ سَمِعْتُ سَعْدًا يَقُولُ رُدَّ عَلَى عُثْمَانَ بْنِ مَظْعُونٍ التَّبَتُّلُ وَلَوْ أُذِنَ لَهُ لاَخْتَصَيْنَا.

It was narrated that Sa'eed bin Al-Musayyab said: "I heard Sa'd say: 'He forbade 'Uthman bin Maz'un to be celibate. If he had given him permission, we would have gotten ourselves castrated."'

حضرت سعید بن مسیب رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ میں نے حضرت سعد کو فرماتے ہوئے سنا کہ آپ ﷺنے حضرت عثمان بن مظعون رضی اللہ عنہ کو تبتل ( مجرد رہنے ) سے روک دیا ، اگر آپ ﷺاسے اجازت دیتے تو ہم خصی ہو جاتے۔


حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ رَافِعٍ حَدَّثَنَا حُجَيْنُ بْنُ الْمُثَنَّى حَدَّثَنَا لَيْثٌ عَنْ عُقَيْلٍ عَنِ ابْنِ شِهَابٍ أَنَّهُ قَالَ أَخْبَرَنِى سَعِيدُ بْنُ الْمُسَيَّبِ أَنَّهُ سَمِعَ سَعْدَ بْنَ أَبِى وَقَّاصٍ يَقُولُ أَرَادَ عُثْمَانُ بْنُ مَظْعُونٍ أَنْ يَتَبَتَّلَ فَنَهَاهُ رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- وَلَوْ أَجَازَ لَهُ ذَلِكَ لاَخْتَصَيْنَا.

Sa'id bin Al-Musayyab narrated that he heard Sa'd bin Abi Waqqas say: "'Uthman bin Maz'un wanted to be celibate, but the Messenger of Allah (s.a.w) told him not to. If he had allowed him to do that, we would have gotten ourselves castrated."

حضرت سعد بن ابی وقاص رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ حضرت عثمان بن معظون رضی اللہ عنہ نے مجرد یعنی غیر شادی شدہ رہنے کا ارادہ کیا تو رسول اللہ ﷺنے اسے منع فرما دیا اور اگر آپ ﷺاجازت دے دیتے تو ہم سب خصی ہو جاتے۔

Chapter No: 2

بابُ نَدْبِ مَنْ رَأَى امْرَأَةً فَوَقَعَتْ فِي نَفْسِهِ إِلَى أَنْ يَأْتِيَ امْرَأَتَهُ أَوْ جَارِيَتَهُ فَيُوَاقِعَهَا

It is recommended for the one who sees a woman and feels the urge in his heart, to go to his wife or slave woman and have intercourse with her

جس نے کسی عورت کو دیکھا اور اپنے نفس میں میلان پایا تو اس کو چاہیے کہ اپنی بیوی یا لونڈی سے آکر صحبت کرلے۔

حَدَّثَنَا عَمْرُو بْنُ عَلِىٍّ حَدَّثَنَا عَبْدُ الأَعْلَى حَدَّثَنَا هِشَامُ بْنُ أَبِى عَبْدِ اللَّهِ عَنْ أَبِى الزُّبَيْرِ عَنْ جَابِرٍ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- رَأَى امْرَأَةً فَأَتَى امْرَأَتَهُ زَيْنَبَ وَهْىَ تَمْعَسُ مَنِيئَةً لَهَا فَقَضَى حَاجَتَهُ ثُمَّ خَرَجَ إِلَى أَصْحَابِهِ فَقَالَ « إِنَّ الْمَرْأَةَ تُقْبِلُ فِى صُورَةِ شَيْطَانٍ وَتُدْبِرُ فِى صُورَةِ شَيْطَانٍ فَإِذَا أَبْصَرَ أَحَدُكُمُ امْرَأَةً فَلْيَأْتِ أَهْلَهُ فَإِنَّ ذَلِكَ يَرُدُّ مَا فِى نَفْسِهِ ».

It was narrated from Jabir that the Messenger of Allah (s.a.w) saw a woman, then he came to his wife Zainab who was tanning a leather, and fulfilled his desire then he went out to his Companions and said: "A woman comes in the form of a devil and goes in the form of a devil. If one of you sees a woman, let him go to his wife, for that will repel what he feels in his heart."

حضرت جابر رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے ایک عورت کو دیکھا تو فورا ً آپ ﷺ اپنی بیوی زینب رضی اللہ تعالیٰ عنہا کے پاس آئے وہ اس وقت کھال کو رنگ دے رہی تھیں اور آپ ﷺنے اپنی حاجت پوری فرمائی پھر آپﷺ اپنے صحابہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ کی طرف تشریف لے گئے اورفرمایا: عورت شیطان کی شکل میں سامنے آتی ہے اور شیطانی صورت میں پیٹھ پھیرتی ہے جب تم میں سے کوئی کسی عورت کو دیکھے تو اپنی بیوی کے پاس آئے، یہ کام اس کے خیالا ت کو دور کردے گا۔


حَدَّثَنَا زُهَيْرُ بْنُ حَرْبٍ حَدَّثَنَا عَبْدُ الصَّمَدِ بْنُ عَبْدِ الْوَارِثِ حَدَّثَنَا حَرْبُ بْنُ أَبِى الْعَالِيَةِ حَدَّثَنَا أَبُو الزُّبَيْرِ عَنْ جَابِرِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ أَنَّ النَّبِىَّ -صلى الله عليه وسلم- رَأَى امْرَأَةً. فَذَكَرَ بِمِثْلِهِ غَيْرَ أَنَّهُ قَالَ فَأَتَى امْرَأَتَهُ زَيْنَبَ وَهْىَ تَمْعَسُ مَنِيئَةً. وَلَمْ يَذْكُرْ تُدْبِرُ فِى صُورَةِ شَيْطَانٍ.

It was narrated from Jabir bin 'Abdullah that the Prophet (s.a.w) saw a woman... and he mentioned a similar report (as no. 3407), except that he said: "He came to his wife Zainab who was tanning a leather," and he did not mention (the phrase): "And goes in the form of a devil."

حضرت جابر رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ نبی ﷺنے ایک عورت کو دیکھا، اس کے بعد مذکورہ بالا حدیث کی طرح ہے ،اور اس میں یہ ہے کہ آپﷺحضرت زینب رضی اللہ عنہا کے پاس آئے اس حال میں کہ وہ کھال کورنگ رہی تھیں ، لیکن اس میں یہ نہیں ہے کہ آپﷺنے فرمایا: عورت شیطانی شکل میں جاتی ہے۔


وَحَدَّثَنِى سَلَمَةُ بْنُ شَبِيبٍ حَدَّثَنَا الْحَسَنُ بْنُ أَعْيَنَ حَدَّثَنَا مَعْقِلٌ عَنْ أَبِى الزُّبَيْرِ قَالَ قَالَ جَابِرٌ سَمِعْتُ النَّبِىَّ -صلى الله عليه وسلم- يَقُولُ « إِذَا أَحَدُكُمْ أَعْجَبَتْهُ الْمَرْأَةُ فَوَقَعَتْ فِى قَلْبِهِ فَلْيَعْمِدْ إِلَى امْرَأَتِهِ فَلْيُوَاقِعْهَا فَإِنَّ ذَلِكَ يَرُدُّ مَا فِى نَفْسِهِ ».

Jabir said: "I heard the Prophet (s.a.w) say: 'If one of you likes a woman and feels attracted to her, let him go to his wife and have intercourse with her, for that will repel what is in his heart."'

حضرت جابر رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ میں نے نبیﷺکو یہ فرماتے ہوئے سنا: جب تم میں سے کسی کو کوئی عورت اچھی لگے اوردل میں اس کا خیال آئے تو اپنی بیوی کے پاس جائے اور اس سے اپنی خواہش پوری کرے ،اسے اس کے دل کا میلان دور ہوجائے گا۔

Chapter No: 3

بابُ نِكَاحِ الْمُتْعَةِ وَبَيَانِ أَنَّهُ أُبِيحَ ثُمَّ نُسِخَ ثُمَّ أُبِيحَ ثُمَّ نُسِخَ وَاسْتَقَرَّ تَحْرِيمُهُ إِلَى يَوْمِ الْقِيَامَةِ

Concerning; the Mut’ah (temporary) marriage, and the clarification that it was permitted then abrogated, then permitted then abrogated, and it will remain prohibited until the day of resurrection

نکاح متعہ اور اس کا بیان کہ وہ جائز کیا گیا ، پھر منسوخ کیا گیا ، پھر جائز کیا گیا ، پھر منسوخ کیا گیا ، اور(اس کے بعد) اس کی حرمت قیامت تک باقی رہ گئی۔

حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ نُمَيْرٍ الْهَمْدَانِىُّ حَدَّثَنَا أَبِى وَوَكِيعٌ وَابْنُ بِشْرٍ عَنْ إِسْمَاعِيلَ عَنْ قَيْسٍ قَالَ سَمِعْتُ عَبْدَ اللَّهِ يَقُولُ كُنَّا نَغْزُو مَعَ رَسُولِ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- لَيْسَ لَنَا نِسَاءٌ فَقُلْنَا أَلاَ نَسْتَخْصِى فَنَهَانَا عَنْ ذَلِكَ ثُمَّ رَخَّصَ لَنَا أَنْ نَنْكِحَ الْمَرْأَةَ بِالثَّوْبِ إِلَى أَجَلٍ ثُمَّ قَرَأَ عَبْدُ اللَّهِ ( يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُوا لاَ تُحَرِّمُوا طَيِّبَاتِ مَا أَحَلَّ اللَّهُ لَكُمْ وَلاَ تَعْتَدُوا إِنَّ اللَّهَ لاَ يُحِبُّ الْمُعْتَدِينَ ).

'Abdullah said: "We were on a campaign with the Messenger of Allah (s.a.w), and we had no women with us. We said: 'Why don't we get ourselves castrated?' But he forbade us to do that, then he granted us a concession allowing us to marry women in return for a garment, for a set period of time." Then 'Abdullah recited the verse: "O you who believe! Make not unlawful the Tayyibat (all that is good as regards foods, things, deeds, beliefs, persons) which Allah has made lawful to you, and transgress not. Verily, Allah does not like the transgressors."

حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ ہم رسول اللہ ﷺکے ساتھ غزوات میں شرکت کرتے تھے اور ہمارے ساتھ عورتیں نہیں ہوتی تھیں، ہم نے پوچھا : کیا ہم خصی نہ ہوجائیں؟ آپ ﷺنے ہمیں اس سے روک دیا ، پھر ہمیں اس کی اجازت دی کہ ہم کسی عورت سے کپڑے کے بدلے مقررہ مدت تک نکاح کرلیں پھر حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے یہ آیت تلاوت کی اے ایمان والو! پاکیزہ چیزوں کو حرام نہ کرو جنہیں اللہ نے تمہارے لئے حلال کیا ہے اور نہ حد سے تجاوز کرو بے شک اللہ تجاوز کرنے والوں کو پسند نہیں کرتا۔


وَحَدَّثَنَا عُثْمَانُ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا جَرِيرٌ عَنْ إِسْمَاعِيلَ بْنِ أَبِى خَالِدٍ بِهَذَا الإِسْنَادِ. مِثْلَهُ وَقَالَ ثُمَّ قَرَأَ عَلَيْنَا هَذِهِ الآيَةَ. وَلَمْ يَقُلْ قَرَأَ عَبْدُ اللَّهِ.

A similar report (as no. 3410) narrated from Isma'il bin Abi Kbalid with this chain, and he said: "Then he recited this verse to us," and he did not say: "'Abdullah recited."

ایک اور سند سے بھی یہ حدیث مروی ہے لیکن اس میں حضرت عبد اللہ بن مسعود کے آیت پڑھنے کا ذکر نہیں ہے۔


وَحَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا وَكِيعٌ عَنْ إِسْمَاعِيلَ بِهَذَا الإِسْنَادِ قَالَ كُنَّا وَنَحْنُ شَبَابٌ فَقُلْنَا يَا رَسُولَ اللَّهِ أَلاَ نَسْتَخْصِى وَلَمْ يَقُلْ نَغْزُو.

It was narrated from Isma'il with this chain (a Hadith similar to no. 3410). He said: "When we were young men, we said: 'O Messenger of Allah, should we not get ourselves castrated?"' And he did not mention: "We were on a campaign."

ایک اور سند سے بھی یہ حدیث مروی ہے اور اس میں یہ ہے کہ ہم جوان تھے ہم نے کہا اے اللہ کے رسولﷺ!کیا ہم خصی نہ ہوجائیں؟ اور یہ نہیں کہا کہ ہم جہاد کے لیے جاتے تھے۔


وَحَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ بَشَّارٍ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ جَعْفَرٍ حَدَّثَنَا شُعْبَةُ عَنْ عَمْرِو بْنِ دِينَارٍ قَالَ سَمِعْتُ الْحَسَنَ بْنَ مُحَمَّدٍ يُحَدِّثُ عَنْ جَابِرِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ وَسَلَمَةَ بْنِ الأَكْوَعِ قَالاَ خَرَجَ عَلَيْنَا مُنَادِى رَسُولِ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- فَقَالَ إِنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- قَدْ أَذِنَ لَكُمْ أَنْ تَسْتَمْتِعُوا. يَعْنِى مُتْعَةَ النِّسَاءِ.

It was narrated that Jabir bin 'Abdullah and Salamah bin Al-Akwa' said: "The caller of the Messenger of Allah (s.a.w) came out to us and said: 'The Messenger of Allah (s.a.w) has given you permission to enter into Mut'ah marriages with women."'

حضرت جابر بن عبداللہ وسلمہ بن اکوع رضی اللہ عنہما سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺکے منادی نے ہمارے سامنے اعلان کیا کہ رسول اللہ ﷺنے تم لوگوں کو اجازت دی ہے کہ تم عورتوں سے متعہ کرو۔


وَحَدَّثَنِى أُمَيَّةُ بْنُ بِسْطَامَ الْعَيْشِىُّ حَدَّثَنَا يَزِيدُ - يَعْنِى ابْنَ زُرَيْعٍ - حَدَّثَنَا رَوْحٌ - يَعْنِى ابْنَ الْقَاسِمِ - عَنْ عَمْرِو بْنِ دِينَارٍ عَنِ الْحَسَنِ بْنِ مُحَمَّدٍ عَنْ سَلَمَةَ بْنِ الأَكْوَعِ وَجَابِرِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- أَتَانَا فَأَذِنَ لَنَا فِى الْمُتْعَةِ.

It was narrated from Salamah bin Al-Akwa' and Jabir bin 'Abdullah that the Messenger of Allah (s.a.w) came to us and gave us permission for Mut'ah.

حضرت جابر بن عبداللہ وسلمہ بن اکوع رضی اللہ عنہما سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺہمارے پاس آئے اور ہمیں متعہ کی اجازت دی۔


وَحَدَّثَنَا الْحَسَنُ الْحُلْوَانِىُّ حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّزَّاقِ أَخْبَرَنَا ابْنُ جُرَيْجٍ قَالَ قَالَ عَطَاءٌ قَدِمَ جَابِرُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ مُعْتَمِرًا فَجِئْنَاهُ فِى مَنْزِلِهِ فَسَأَلَهُ الْقَوْمُ عَنْ أَشْيَاءَ ثُمَّ ذَكَرُوا الْمُتْعَةَ فَقَالَ نَعَمِ اسْتَمْتَعْنَا عَلَى عَهْدِ رَسُولِ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- وَأَبِى بَكْرٍ وَعُمَرَ.

'Ata' said: "Jabir bin 'Abdullah came for 'Umrah and we went to him where he was staying, and the people asked him about various things. Then they mentioned Mut'ah and he said: 'Yes, we engaged in Mut'ah at the time of the Messenger of Allah (s.a.w), Abu Bakr and 'Umar."'

عطاء کہتے ہیں کہ حضرت جابر بن عبد اللہ رضی اللہ عنہ عمرہ کرنے کے لیے تشریف لائے تو ہم ان کے قیام گاہ پر آئے ، لوگوں نے ان سے کچھ چیزوں کے بارے میں پوچھا ، پھر لوگوں نے متعہ کا ذکر کیا ، انہوں نے فرمایا: ہاں، ہم نے رسول اللہ ﷺکے زمانے میں ، اور حضرت ابو بکر اور حضرت عمر رضی اللہ عنہما کے زمانے میں متعہ کیا۔


حَدَّثَنِى مُحَمَّدُ بْنُ رَافِعٍ حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّزَّاقِ أَخْبَرَنَا ابْنُ جُرَيْجٍ أَخْبَرَنِى أَبُو الزُّبَيْرِ قَالَ سَمِعْتُ جَابِرَ بْنَ عَبْدِ اللَّهِ يَقُولُ كُنَّا نَسْتَمْتِعُ بِالْقُبْضَةِ مِنَ التَّمْرِ وَالدَّقِيقِ الأَيَّامَ عَلَى عَهْدِ رَسُولِ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- وَأَبِى بَكْرٍ حَتَّى نَهَى عَنْهُ عُمَرُ فِى شَأْنِ عَمْرِو بْنِ حُرَيْثٍ.

Jabir bin 'Abdullah said: "We used to engage in Mut'ah in exchange for a handful of dates or flour, for several days, at the time of the Messenger of Allah (s.a.w) and Abu Bakr, until 'Umar forbade it in the case of 'Amr bin Huraith."

حضرت جابر بن عبد اللہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے وہ فرماتے ہیں کہ ہم رسول اللہ ﷺاور حضرت ابو بکر رضی اللہ عنہ کےدور میں ایک مٹھی چھوہاروں یا ایک مٹھی آٹے کے عوض متعہ کرلیا کرتے تھے یہاں تک کہ حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے عمرو بن حریث کے واقعہ سے اس کی ممانعت کا اعلان کردیا۔


حَدَّثَنَا حَامِدُ بْنُ عُمَرَ الْبَكْرَاوِىُّ حَدَّثَنَا عَبْدُ الْوَاحِدِ - يَعْنِى ابْنَ زِيَادٍ - عَنْ عَاصِمٍ عَنْ أَبِى نَضْرَةَ قَالَ كُنْتُ عِنْدَ جَابِرِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ فَأَتَاهُ آتٍ فَقَالَ ابْنُ عَبَّاسٍ وَابْنُ الزُّبَيْرِ اخْتَلَفَا فِى الْمُتْعَتَيْنِ فَقَالَ جَابِرٌ فَعَلْنَاهُمَا مَعَ رَسُولِ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- ثُمَّ نَهَانَا عَنْهُمَا عُمَرُ فَلَمْ نَعُدْ لَهُمَا.

It was narrated that Abu Nadrah said: "I was with Jabir bin 'Abdullah when someone came to him and said: 'Ibn 'Abbas and Ibn Az-Zubair disagreed concerning the two Mut'ah.' Jabir said: 'We did them both at the time of the Messenger of Allah (s.a.w), then 'Umar forbade us to do them, and we did not do them again.'"

حضرت ابو نضرہ سے روایت ہے وہ فرماتے ہیں کہ میں جابر بن عبد اللہ رضی اللہ عنہ کے پاس بیٹھا ہوا تھا کہ ایک آنے والے نے آکر کہا: حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ اور حضرت ابن الزبیر کے درمیان دو متعوں میں اختلاف ہوا ،( عورتوں سے متعہ اور حج تمتع ) ، حضرت جابر رضی اللہ عنہ نے کہا: ہم نے رسول اللہ ﷺکے زمانہ میں دونوں متعے کئے تھے ، پھر حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے ہمیں ان دونوں سے منع کر دیا ، اس کے بعد ہم نے ان دونوں کاموں کونہیں کیا۔


حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا يُونُسُ بْنُ مُحَمَّدٍ حَدَّثَنَا عَبْدُ الْوَاحِدِ بْنُ زِيَادٍ حَدَّثَنَا أَبُو عُمَيْسٍ عَنْ إِيَاسِ بْنِ سَلَمَةَ عَنْ أَبِيهِ قَالَ رَخَّصَ رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- عَامَ أَوْطَاسٍ فِى الْمُتْعَةِ ثَلاَثًا ثُمَّ نَهَى عَنْهَا.

It was narrated from Iyas bin Salamah that his father said: "During the year of Awtas, the Messenger of Allah (s.a.w) granted a concession allowing Mut'ah three, then he forbade it."

ایا س بن سلمہ اپنے والد سے روایت کرتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺنے جنگ اوطاس (فتح مکہ)کے سال ہمیں تین دن متعہ کرنے کی اجازت دی ، پھر آپﷺنے اس سے منع کردیا۔


وَحَدَّثَنَا قُتَيْبَةُ بْنُ سَعِيدٍ حَدَّثَنَا لَيْثٌ عَنِ الرَّبِيعِ بْنِ سَبْرَةَ الْجُهَنِىِّ عَنْ أَبِيهِ سَبْرَةَ أَنَّهُ قَالَ أَذِنَ لَنَا رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- بِالْمُتْعَةِ فَانْطَلَقْتُ أَنَا وَرَجُلٌ إِلَى امْرَأَةٍ مِنْ بَنِى عَامِرٍ كَأَنَّهَا بَكْرَةٌ عَيْطَاءُ فَعَرَضْنَا عَلَيْهَا أَنْفُسَنَا فَقَالَتْ مَا تُعْطِى فَقُلْتُ رِدَائِى. وَقَالَ صَاحِبِى رِدَائِى. وَكَانَ رِدَاءُ صَاحِبِى أَجْوَدَ مِنْ رِدَائِى وَ كُنْتُ أَشَبَّ مِنْهُ فَإِذَا نَظَرَتْ إِلَى رِدَاءِ صَاحِبِى أَعْجَبَهَا وَإِذَا نَظَرَتْ إِلَىَّ أَعْجَبْتُهَا ثُمَّ قَالَتْ أَنْتَ وَرِدَاؤُكَ يَكْفِينِى. فَمَكَثْتُ مَعَهَا ثَلاَثًا ثُمَّ إِنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- قَالَ « مَنْ كَانَ عِنْدَهُ شَىْءٌ مِنْ هَذِهِ النِّسَاءِ الَّتِى يَتَمَتَّعُ فَلْيُخَلِّ سَبِيلَهَا ».

It was narrated from Ar-Rabi' bin Sabrah Al-Juhani that his father said: "The Messenger of Allah (s.a.w) gave us permission for Mut'ah, so I went with another man to a woman of Banu 'Amir, who was like a young long-necked camel, and we proposed to her. She said: 'What will you give me?' I said: 'My Rida'.' My companion said: 'My Rida'.' My companion's Rida' was better than mine, but I was younger than him. When she looked at my companion's Rida ' she liked it, and when she looked at me she liked me. Then she said: 'You and your Rida' are sufficient for me.' I stayed with her for three (days), then the Messenger of Allah (s.a.w) said: 'Whoever has any of these women with him, with whom he has engaged in Mut'ah, he should let her go."'

حضرت سبرہ جہنی رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے ہمیں متعہ کرنے کی اجازت دی تو میں اور ایک آدمی بنوعامر کی ایک عورت کے پاس گئے ، وہ نوجوان اور دراز گردن خاتون تھی ، ہم نے اپنے آپ کو اس پر پیش کیا ، وہ کہنے لگی : کیا دو گے ؟ میں نے کہا: میری چادر حاضر ہے ، اور میرا ساتھی بھی بولا : میری چادر حاضر ہے ، اور میرے ساتھی کی چادر میری چادر سے بہتر تھی لیکن میں اس سے زیادہ جوان تھا۔وہ جب میرے ساتھی کی چادر کو دیکھتی تو اسے پسند کرتی ، اور جب میری طرف دیکھتی تو مجھے پسند کرتی ،بہر حال مجھے کہنے لگی تم اور تمہاری چادر میرے لیے کافی ہے۔پھر میں اس کے پاس تین دن رہا ، اس کے بعد رسول اللہ ﷺنے فرمایا: جس کے پاس متعہ والی عورتیں ہوں وہ ان کو چھوڑ دے۔


حَدَّثَنَا أَبُو كَامِلٍ فُضَيْلُ بْنُ حُسَيْنٍ الْجَحْدَرِىُّ حَدَّثَنَا بِشْرٌ - يَعْنِى ابْنَ مُفَضَّلٍ - حَدَّثَنَا عُمَارَةُ بْنُ غَزِيَّةَ عَنِ الرَّبِيعِ بْنِ سَبْرَةَ أَنَّ أَبَاهُ غَزَا مَعَ رَسُولِ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- فَتْحَ مَكَّةَ قَالَ فَأَقَمْنَا بِهَا خَمْسَ عَشْرَةَ - ثَلاَثِينَ بَيْنَ لَيْلَةٍ وَيَوْمٍ - فَأَذِنَ لَنَا رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- فِى مُتْعَةِ النِّسَاءِ فَخَرَجْتُ أَنَا وَرَجُلٌ مِنْ قَوْمِى وَلِى عَلَيْهِ فَضْلٌ فِى الْجَمَالِ وَهُوَ قَرِيبٌ مِنَ الدَّمَامَةِ مَعَ كُلِّ وَاحِدٍ مِنَّا بُرْدٌ فَبُرْدِى خَلَقٌ وَأَمَّا بُرْدُ ابْنِ عَمِّى فَبُرْدٌ جَدِيدٌ غَضٌّ حَتَّى إِذَا كُنَّا بِأَسْفَلِ مَكَّةَ أَوْ بِأَعْلاَهَا فَتَلَقَّتْنَا فَتَاةٌ مِثْلُ الْبَكْرَةِ الْعَنَطْنَطَةِ فَقُلْنَا هَلْ لَكِ أَنْ يَسْتَمْتِعَ مِنْكِ أَحَدُنَا قَالَتْ وَمَاذَا تَبْذُلاَنِ فَنَشَرَ كُلُّ وَاحِدٍ مِنَّا بُرْدَهُ فَجَعَلَتْ تَنْظُرُ إِلَى الرَّجُلَيْنِ وَيَرَاهَا صَاحِبِى تَنْظُرُ إِلَى عِطْفِهَا فَقَالَ إِنَّ بُرْدَ هَذَا خَلَقٌ وَبُرْدِى جَدِيدٌ غَضٌّ. فَتَقُولُ بُرْدُ هَذَا لاَ بَأْسَ بِهِ. ثَلاَثَ مِرَارٍ أَوْ مَرَّتَيْنِ ثُمَّ اسْتَمْتَعْتُ مِنْهَا فَلَمْ أَخْرُجْ حَتَّى حَرَّمَهَا رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم-.

It was narrated from Ar-Rabi' bin Sabrah that his father went out with the Messenger of Allah (s.a.w) to conquer Makkah. He said: "We stayed there for fifteen - thirty between night and day - and the Messenger of Allah (s.a.w) gave us permission to engage in Mut'ah marriages with women. I went out with a-man from among my people, and I had an advantage over him in terms of good looks, as he was almost ugly. Each of us had a Burd. But my Burd was worn out whereas the Burd of my cousin was quite new. When we reached the lower part of Makkah, or the upper part, we were met by a girl like a long-necked young camel. We said: 'Will you let one of us engage in Mut'ah with you?' She said: 'What will you give me?' Each of us spread out his Burd and she started looking at the two men, and my companion saw her turning away from him. He said: 'This man's cloak is worn out but my cloak is quite new.' She said: 'There is nothing wrong with his cloak,' (she said this) three times or two times. Then I engaged in Mut'ah with her, and I did not come out until the Messenger of Allah (s.a.w) forbade it.''

ربیع بن سبرہ کہتے ہیں کہ ان کے والد ماجد نے فتح مکہ کے روز رسول اللہ ﷺکے ساتھ جہاد کیا ، ان کے والد فرماتے ہیں کہ ہم نے مکہ میں پندرہ دن قیام کیا ، رسول اللہ ﷺنے ہمیں عورتوں کے ساتھ تمتع کرنے کی اجازت دی ، میں اپنی قوم کے ایک آدمی کے ساتھ نکلا ، مجھے اس پر خوبصورتی کے اعتبار سے برتری حاصل تھی،اور وہ بدصورتی کے قریب تھا،ہم میں سے ہر ایک کے پاس ایک ایک چادر تھی ، مگر میری چادر پرانی تھی،اور اس کی چادر اچھی تھی،جب ہم مکہ کی جانب پہنچے ، تو ایک عورت سے ملاقات ہوئی، وہ عورت جوان ، تندرست اور دراز گردن تھی۔ہم نے ان سے کہا : تم ہم میں سے کسی ایک کے ساتھ متعہ کرسکتی ہو؟ اس عورت نے کہا: تم دونوں کیا خرچ کروگے ؟ ہم میں سے ہر ایک نے اپنی اپنی چادر پھیلادی ، وہ عورت ہم کو بغور دیکھنے لگی۔ میرا ساتھی اس کی توجہ کا منتظر تھا، کہنے لگا: اس کی چادر پرانی ہے اور میری چادر نئی اور عمدہ ہے، ا س عورت نے دو یا تین بار کہا: اس کی چادر میں کوئی حرج نہیں ہے ۔ میں نے اس عورت سے متعہ کیا ، پھر اس عورت کے پاس سے اس وقت تک نہیں گیا جب تک رسول اللہ ﷺنے متعہ کو حرام نہیں کردیا۔


وَحَدَّثَنِى أَحْمَدُ بْنُ سَعِيدِ بْنِ صَخْرٍ الدَّارِمِىُّ حَدَّثَنَا أَبُو النُّعْمَانِ حَدَّثَنَا وُهَيْبٌ حَدَّثَنَا عُمَارَةُ بْنُ غَزِيَّةَ حَدَّثَنِى الرَّبِيعُ بْنُ سَبْرَةَ الْجُهَنِىُّ عَنْ أَبِيهِ قَالَ خَرَجْنَا مَعَ رَسُولِ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- عَامَ الْفَتْحِ إِلَى مَكَّةَ. فَذَكَرَ بِمِثْلِ حَدِيثِ بِشْرٍ. وَزَادَ قَالَتْ وَهَلْ يَصْلُحُ ذَاكَ وَفِيهِ قَالَ إِنَّ بُرْدَ هَذَا خَلَقٌ مَحٌّ.

Ar-Rabi' bin Sabrah Al-Juhani narrated that his father said: "We went out with the Messenger of Allah (s.a.w) to Makkah during the Year of the Conquest ..." and he mentioned a Hadith like that of Bishr (no.3420), but he added: "She said: 'Can that be possible?"' And in (the report) it says: "He said: T his man's Burd is old and worn out."'

سبرہ جہنی سے روایت ہے کہ ہم رسول اللہ ﷺکے ساتھ فتح مکہ سال مکہ کی طرف نکلے ، اس کے بعد حسب سابق ہے اور اس میں یہ ہے کہ اس عورت نے کہا: کیا یہ ٹھیک ہے؟ اور اس کے ساتھی نے کہا : اس کی چادر پرانی اور بے کار ہے۔


حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ نُمَيْرٍ حَدَّثَنَا أَبِى حَدَّثَنَا عَبْدُ الْعَزِيزِ بْنُ عُمَرَ حَدَّثَنِى الرَّبِيعُ بْنُ سَبْرَةَ الْجُهَنِىُّ أَنَّ أَبَاهُ حَدَّثَهُ أَنَّهُ كَانَ مَعَ رَسُولِ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- فَقَالَ « يَا أَيُّهَا النَّاسُ إِنِّى قَدْ كُنْتُ أَذِنْتُ لَكُمْ فِى الاِسْتِمْتَاعِ مِنَ النِّسَاءِ وَإِنَّ اللَّهَ قَدْ حَرَّمَ ذَلِكَ إِلَى يَوْمِ الْقِيَامَةِ فَمَنْ كَانَ عِنْدَهُ مِنْهُنَّ شَىْءٌ فَلْيُخَلِّ سَبِيلَهُ وَلاَ تَأْخُذُوا مِمَّا آتَيْتُمُوهُنَّ شَيْئًا ».

Ar-Rabi' bin Sabrah Al-Juhani narrated that his father told him that he was with the Messenger of Allah (s.a.w) and he said: "O people, I had given you permission to engage in Mut'ah marriages with women, but now Allah has forbidden that until the Day of Resurrection, so whoever has any of them with him, he should let her go, and do not take back anything that you gave to them."

ربیع بن سبرہ جہنی کہتے ہیں کہ ان کے والد نے بیان کیا کہ میں رسول اللہ ﷺکے ساتھ تھا ، آپﷺنے فرمایا: اے لوگو! میں نے تم کو عورتوں سے متعہ کی اجازت دی تھی ، اور اللہ تعالیٰ نے متعہ کو قیامت تک حرام کردیا ہے ،سو جس آدمی کے پاس متعہ والی عورت ہو وہ اس کو چھوڑ دے اور جو کچھ اس عورت کو دیا ہو وہ واپس نہ لے۔


وَحَدَّثَنَاهُ أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا عَبْدَةُ بْنُ سُلَيْمَانَ عَنْ عَبْدِ الْعَزِيزِ بْنِ عُمَرَ بِهَذَا الإِسْنَادِ قَالَ رَأَيْتُ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- قَائِمًا بَيْنَ الرُّكْنِ وَالْبَابِ وَهُوَ يَقُولُ بِمِثْلِ حَدِيثِ ابْنِ نُمَيْرٍ.

It was narrated from ·Abdul-'Aziz bin 'Umar, with this chain. He said: "I saw the Messenger of Allah (s.a.w) standing between the Corner and the door, saying ..." a Hadith like that of Ibn Numair (no. 3422).

مذکورہ بالا سند سے ہے کہ میں نے رسول اللہ ﷺکودیکھا کہ آپ کعبہ کے رکن اور دروازے کے درمیان کھڑے ہوئے فرما رہے تھے ۔ اس کے بعد حسب سابق روایت ہے۔


حَدَّثَنَا إِسْحَاقُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ أَخْبَرَنَا يَحْيَى بْنُ آدَمَ حَدَّثَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ سَعْدٍ عَنْ عَبْدِ الْمَلِكِ بْنِ الرَّبِيعِ بْنِ سَبْرَةَ الْجُهَنِىِّ عَنْ أَبِيهِ عَنْ جَدِّهِ قَالَ أَمَرَنَا رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- بِالْمُتْعَةِ عَامَ الْفَتْحِ حِينَ دَخَلْنَا مَكَّةَ ثُمَّ لَمْ نَخْرُجْ مِنْهَا حَتَّى نَهَانَا عَنْهَا.

It was narrated from 'Abdul-Malik bin Sabrah Al-Juhani, from his father, that his grandfather said: "The Messenger of Allah (s.a.w) permitted us to engage in Mut'ah during the Year of the Conquest, when we entered Makkah, then we did not leave Makkah before he forbade us to do that."

سبرہ جہنی سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے ہمیں فتح مکہ سال جب ہم مکہ میں داخل ہوئے متعہ کا حکم دیا ،پھر مکہ سے واپس ہونے سے پہلے آپ نے ہمیں متعہ سے منع فرمادیا۔


وَحَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ يَحْيَى أَخْبَرَنَا عَبْدُ الْعَزِيزِ بْنُ الرَّبِيعِ بْنِ سَبْرَةَ بْنِ مَعْبَدٍ قَالَ سَمِعْتُ أَبِى رَبِيعَ بْنَ سَبْرَةَ يُحَدِّثُ عَنْ أَبِيهِ سَبْرَةَ بْنِ مَعْبَدٍ أَنَّ نَبِىَّ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- عَامَ فَتْحِ مَكَّةَ أَمَرَ أَصْحَابَهُ بِالتَّمَتُّعِ مِنَ النِّسَاءِ - قَالَ - فَخَرَجْتُ أَنَا وَصَاحِبٌ لِى مِنْ بَنِى سُلَيْمٍ حَتَّى وَجَدْنَا جَارِيَةً مِنْ بَنِى عَامِرٍ كَأَنَّهَا بَكْرَةٌ عَيْطَاءُ فَخَطَبْنَاهَا إِلَى نَفْسِهَا وَعَرَضْنَا عَلَيْهَا بُرْدَيْنَا فَجَعَلَتْ تَنْظُرُ فَتَرَانِى أَجْمَلَ مِنْ صَاحِبِى وَتَرَى بُرْدَ صَاحِبِى أَحْسَنَ مِنْ بُرْدِى فَآمَرَتْ نَفْسَهَا سَاعَةً ثُمَّ اخْتَارَتْنِى عَلَى صَاحِبِى فَكُنَّ مَعَنَا ثَلاَثًا ثُمَّ أَمَرَنَا رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- بِفِرَاقِهِنَّ.

It was narrated from Sabrah bin Ma'bad that during the year of the conquest of Makkah, the Prophet of Allah (s.a.w) permitted his Companions to engage in Mut'ah marriage with women. He said: "I went out with a companion of mine from Banu Sulaim, and we found a girl from Banu 'Amir who was like a long-necked young camel. We proposed marriage to her, and showed her our Burd, and she started looking. She found me more handsome than my companion, but she saw that my companion's Burd was better than mine. She thought for a while, then she chose me over my companion. They were with us for three days, then the Messenger of Allah (s.a.w) ordered us to part company with them."

حضرت سبرہ بن معبد رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ اللہ کے نبی ﷺنے فتح مکہ کے سال اپنے ساتھیوں کو عورتوں سے متعہ کرنے کا حکم دیا ،میں اور بنو سلیم قبیلہ سے میرا ایک ساتھی گئے ، یہاں تک کہ ہمیں بنو عامر کی ایک لڑکی ملی ، وہ نوجوان اور کنواری تھی ، ہم نے اس سے متعہ کی درخواست کی اور اس پراپنی چادریں پیش کیں ، کبھی وہ مجھے غور سے دیکھتی کیونکہ میں اپنے ساتھی سے زیادہ خوبصورت تھا ، اور کبھی میرے ساتھی کی چادر کو دیکھتی کیونکہ اس کی چادر میری چادر سے زیادہ اچھی تھی۔ اس لڑکی نے سوچ کر میرے ساتھی کےمقابلہ میں مجھے اختیار کرلیا ، وہ میرے ساتھ تین دن رہی ، پھر ہمیں رسول اللہ ﷺنے متعہ والی عورتوں سے علیحدہ ہونے کاحکم دے دیا۔


حَدَّثَنَا عَمْرٌو النَّاقِدُ وَابْنُ نُمَيْرٍ قَالاَ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ بْنُ عُيَيْنَةَ عَنِ الزُّهْرِىِّ عَنِ الرَّبِيعِ بْنِ سَبْرَةَ عَنْ أَبِيهِ أَنَّ النَّبِىَّ -صلى الله عليه وسلم- نَهَى عَنْ نِكَاحِ الْمُتْعَةِ.

It was narrated from Ar-Rabi' bin Sabrah, from his father, that the Prophet (s.a.w) forbade Mut'ah marriage.

حضرت سبرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے نکاح متعہ سے منع فرمادیا تھا۔


وَحَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا ابْنُ عُلَيَّةَ عَنْ مَعْمَرٍ عَنِ الزُّهْرِىِّ عَنِ الرَّبِيعِ بْنِ سَبْرَةَ عَنْ أَبِيهِ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- نَهَى يَوْمَ الْفَتْحِ عَنْ مُتْعَةِ النِّسَاءِ.

It was narrated from Ar-Rabi' bin Sabrah, from his father, that on the day of the conquest of Makkah, the Messenger of Allah (s.a.w) forbade Mut'ah marriage with women.

حضرت سبرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ فتح مکہ کے دن رسول اللہ ﷺ ہے نکاح متعہ سے منع فرمادیا تھا۔


وَحَدَّثَنِيهِ حَسَنٌ الْحُلْوَانِىُّ وَعَبْدُ بْنُ حُمَيْدٍ عَنْ يَعْقُوبَ بْنِ إِبْرَاهِيمَ بْنِ سَعْدٍ حَدَّثَنَا أَبِى عَنْ صَالِحٍ أَخْبَرَنَا ابْنُ شِهَابٍ عَنِ الرَّبِيعِ بْنِ سَبْرَةَ الْجُهَنِىِّ عَنْ أَبِيهِ أَنَّهُ أَخْبَرَهُ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- نَهَى عَنِ الْمُتْعَةِ زَمَانَ الْفَتْحِ مُتْعَةِ النِّسَاءِ وَأَنَّ أَبَاهُ كَانَ تَمَتَّعَ بِبُرْدَيْنِ أَحْمَرَيْنِ.

It was narrated from Ar-Rabi' bin Sabrah Al-Juhani that his father told him that the Messenger of Allah (s.a.w) forbade Mut'ah at the time of the Conquest, i.e., Mut'ah with women, and that his father had engaged in a Mut'ah marriage in exchange for two red Burd.

ربیع بن سبرہ جہنی رضی اللہ عنہ اپنے والد سے روایت کرتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺنے فتح مکہ کے وقت عورتوں سے متعہ کرنے سے منع فرمایا تھا، اور ان کے والد نے دو سرخ چادروں کے بدلے متعہ کیا تھا۔


وَحَدَّثَنِى حَرْمَلَةُ بْنُ يَحْيَى أَخْبَرَنَا ابْنُ وَهْبٍ أَخْبَرَنِى يُونُسُ قَالَ ابْنُ شِهَابٍ أَخْبَرَنِى عُرْوَةُ بْنُ الزُّبَيْرِ أَنَّ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ الزُّبَيْرِ قَامَ بِمَكَّةَ فَقَالَ إِنَّ نَاسًا - أَعْمَى اللَّهُ قُلُوبَهُمْ كَمَا أَعْمَى أَبْصَارَهُمْ - يُفْتُونَ بِالْمُتْعَةِ - يُعَرِّضُ بِرَجُلٍ - فَنَادَاهُ فَقَالَ إِنَّكَ لَجِلْفٌ جَافٍ فَلَعَمْرِى لَقَدْ كَانَتِ الْمُتْعَةُ تُفْعَلُ عَلَى عَهْدِ إِمَامِ الْمُتَّقِينَ - يُرِيدُ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- - فَقَالَ لَهُ ابْنُ الزُّبَيْرِ فَجَرِّبْ بِنَفْسِكَ فَوَاللَّهِ لَئِنْ فَعَلْتَهَا لأَرْجُمَنَّكَ بِأَحْجَارِكَ. قَالَ ابْنُ شِهَابٍ فَأَخْبَرَنِى خَالِدُ بْنُ الْمُهَاجِرِ بْنِ سَيْفِ اللَّهِ أَنَّهُ بَيْنَا هُوَ جَالِسٌ عِنْدَ رَجُلٍ جَاءَهُ رَجُلٌ فَاسْتَفْتَاهُ فِى الْمُتْعَةِ فَأَمَرَهُ بِهَا فَقَالَ لَهُ ابْنُ أَبِى عَمْرَةَ الأَنْصَارِىُّ مَهْلاً. قَالَ مَا هِىَ وَاللَّهِ لَقَدْ فُعِلَتْ فِى عَهْدِ إِمَامِ الْمُتَّقِينَ. قَالَ ابْنُ أَبِى عَمْرَةَ إِنَّهَا كَانَتْ رُخْصَةً فِى أَوَّلِ الإِسْلاَمِ لِمَنِ اضْطُرَّ إِلَيْهَا كَالْمَيْتَةِ وَالدَّمِ وَلَحْمِ الْخِنْزِيرِ ثُمَّ أَحْكَمَ اللَّهُ الدِّينَ وَنَهَى عَنْهَا. قَالَ ابْنُ شِهَابٍ وَأَخْبَرَنِى رَبِيعُ بْنُ سَبْرَةَ الْجُهَنِىُّ أَنَّ أَبَاهُ قَالَ قَدْ كُنْتُ اسْتَمْتَعْتُ فِى عَهْدِ رَسُولِ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- امْرَأَةً مِنْ بَنِى عَامِرٍ بِبُرْدَيْنِ أَحْمَرَيْنِ ثُمَّ نَهَانَا رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- عَنِ الْمُتْعَةِ. قَالَ ابْنُ شِهَابٍ وَسَمِعْتُ رَبِيعَ بْنَ سَبْرَةَ يُحَدِّثُ ذَلِكَ عُمَرَ بْنَ عَبْدِ الْعَزِيزِ وَأَنَا جَالِسٌ.

'Urwah bin Az-Zubair narrated that 'Abdullah bin Az-Zubair stood up in Makkah and said: "Allah has made some people's hearts blind as He has made their eyes blind; they issue Fatwa in favor of Mut'ah." He was referring to a man who called him and said: "You are uncouth and lacking in manners. By Allah, Mut'ah was done during the time of the leader of the pious" - meaning the Messenger of Allah (s.a.w). Ibn Az-Zubair said to him: "Just try to do it yourself. By Allah, if you do it, I will stone you." Ibn Shihab said: "Khalid bin AI-Muhajir bin Saifullah told me that while he was sitting with a man, another man came to him and asked him about Mut'ah, and he gave him permission for that. Ibn Abi 'Amrah Al-Ansari said to him: 'Wait a minute!' He said: 'What is it? By Allah, I did that at the time of the leader of the pious.' Ibn Abi 'Amrah said: 'It was permitted in the early days of Islam, in cases of necessity, like dead meat, blood and pork, then Allah completed His religion and forbade it.'" Ibn Shihab said: "Rabi' bin Sabrah Al-Juhani told me that his father said: 'At the time of the Prophet (s.a.w), I engaged in Mut'ah with a woman from Banu 'Amir, in return for two red Burd, then the Messenger of Allah (s.a.w) forbade Mut'ah to us."' Ibn Shihab said: "And I heard Rabi' bin Sabrah narrating that to 'Umar bin 'Abdul-'Aziz when I was sitting there.''

حضرت عروہ بن زبیر رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ عبداللہ بن زبیر رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے مکہ میں قیام کیا تو فرمایا : بعض لوگوں کے دلوں کو اللہ نے ایسا اندھا کر دیا جس طرح ان کی آنکھیں اندھی ہیں۔وہ متعہ کے جوازکا فتوی دیتے ہیں ،اتنے میں ایک آدمی نے انہیں پکارا اور کہا: تم کم علم اور نادان ہو، میری عمر کی قسم! امام المتقین یعنی رسول اللہ ﷺ کے زمانہ میں متعہ کیا جاتا تھا تو ان سے ابن زبیر رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے کہا : تم اپنے آپ پر تجربہ کرلو ، اللہ کی قسم ! اگر تم نے ایسا کیا تو میں تجھے پتھروں سے سنگسار کر دوں گا۔ ابن شہاب نے کہا مجھے خالد بن مہاجر بن سیف اللہ نے خبر دی کہ وہ ایک آدمی کے پاس بیٹھا ہوا تھا کہ ایک آدمی نے اس سے آکر متعہ کے بارے میں فتویٰ پوچھا ، تو اس شخص نے اس کو متعہ کی اجازت دے دی ، تو اس سے ابن ابی عمرہ انصاری نے کہا: ٹھہر جا ؤ! اس نے کہا : کیا بات ہے حالانکہ امام المتقینﷺ کے زمانہ میں ایسا کیا گیا۔ ابن ابی عمرہ نے فرمایا: ابتدائے اسلام میں بطور ضرورت اس کیا اجازت تھی مردار اور خون اور خنزیر کے گوشت کی طرح ، پھر اللہ نے دین کو مضبوط کردیا اور متعہ سے منع کردیا۔ ابن شہاب نے کہا : مجھے ربیع بن سبرہ الجہنی نے بتایا کہ اس کےوالد نے کہا : میں نے نبیﷺ کے زمانہ میں بنو عامر کی ایک عورت سے دو سرخ چادروں کے عوض متعہ کیا تھا ، پھر رسول اللہ ﷺ نے ہمیں متعہ سے روک دیا تھا : ابن شہاب نے کہا : کہ میں نے ربیع بن سبرہ کی یہ حدیث عمر بن عبدالعزیز سے بیان کرتے سنا اس حال میں کہ میں وہاں بیٹھا ہوا تھا۔


وَحَدَّثَنِى سَلَمَةَ بْنُ شَبِيبٍ حَدَّثَنَا الْحَسَنُ بْنُ أَعْيَنَ حَدَّثَنَا مَعْقِلٌ عَنِ ابْنِ أَبِى عَبْلَةَ عَنْ عُمَرَ بْنِ عَبْدِ الْعَزِيزِ قَالَ حَدَّثَنَا الرَّبِيعُ بْنُ سَبْرَةَ الْجُهَنِىُّ عَنْ أَبِيهِ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- نَهَى عَنِ الْمُتْعَةِ وَقَالَ « أَلاَ إِنَّهَا حَرَامٌ مِنْ يَوْمِكُمْ هَذَا إِلَى يَوْمِ الْقِيَامَةِ وَمَنْ كَانَ أَعْطَى شَيْئًا فَلاَ يَأْخُذْهُ ».

It was narrated that 'Umar bin 'Abdul-'Aziz said: "Ar-Rabi' bin Sabrah Al-Juhani told me, from his father, that the Messenger of Allah (s,a,w) forbade Mut'ah, and said: 'It is unlawful from this day of yours until the Day of Resurrection, and whoever had given them something, he should not take it back."'

حضرت سبرہ جہنی رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے متعہ سے منع کیا اور فرمایا: سنو! یہ آج کے دن سے قیامت تک کے لیے حرام ہے ۔اور جس آدمی نے متعہ کے عوض کچھ دیا ہو وہ اس سے واپس نہ لے۔


حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ يَحْيَى قَالَ قَرَأْتُ عَلَى مَالِكٍ عَنِ ابْنِ شِهَابٍ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ وَالْحَسَنِ ابْنَىْ مُحَمَّدِ بْنِ عَلِىٍّ عَنْ أَبِيهِمَا عَنْ عَلِىِّ بْنِ أَبِى طَالِبٍ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- نَهَى عَنْ مُتْعَةِ النِّسَاءِ يَوْمَ خَيْبَرَ وَعَنْ أَكْلِ لُحُومِ الْحُمُرِ الإِنْسِيَّةِ.

It was narrated from 'Ali bin Abi Talib that the Messenger of Allah (s.a.w) forbade Mut'ah marriage with women on the Day of Khaibar, and (he forbade) the meat of domestic donkeys.

حضرت علی بن ابی طالب رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ خیبر کے دن رسول اللہ ﷺنے عورتوں سے متعہ کرنے سے، اور پالتو گدھوں کا گوشت کھانے سے منع فرمادیا۔


وَحَدَّثَنَاهُ عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مُحَمَّدِ بْنِ أَسْمَاءَ الضُّبَعِىُّ حَدَّثَنَا جُوَيْرِيَةُ عَنْ مَالِكٍ بِهَذَا الإِسْنَادِ وَقَالَ سَمِعَ عَلِىَّ بْنَ أَبِى طَالِبٍ يَقُولُ لِفُلاَنٍ إِنَّكَ رَجُلٌ تَائِهٌ نَهَانَا رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم-. بِمِثْلِ حَدِيثِ يَحْيَى بْنِ يَحْيَى عَنْ مَالِكٍ.

It was narrated from Malik with this chain, and he said: "He heard 'Ali bin Abi Talib say to so-and-so: 'You are a man who has been led astray. The Messenger of Allah (s.a.w) forbade ..."' a Hadith like that of Yahya bin Yahya, from Malik (no. 3431) .

حضرت علی بن ابی طالب رضی اللہ عنہ نے ایک آدمی سے فرمایا : تم تو بھٹکے ہوئے آدمی ہو، رسول اللہ ﷺنے متعہ سے منع فرمایا۔


حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ وَابْنُ نُمَيْرٍ وَزُهَيْرُ بْنُ حَرْبٍ جَمِيعًا عَنِ ابْنِ عُيَيْنَةَ - قَالَ زُهَيْرٌ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ بْنُ عُيَيْنَةَ - عَنِ الزُّهْرِىِّ عَنِ الْحَسَنِ وَعَبْدِ اللَّهِ ابْنَىْ مُحَمَّدِ بْنِ عَلِىٍّ عَنْ أَبِيهِمَا عَنْ عَلِىٍّ أَنَّ النَّبِىَّ -صلى الله عليه وسلم- نَهَى عَنْ نِكَاحِ الْمُتْعَةِ يَوْمَ خَيْبَرَ وَعَنْ لُحُومِ الْحُمُرِ الأَهْلِيَّةِ.

It was narrated from 'Ali that the Prophet (s.a.w) forbade Mut'ah marriage on the Day of Khaibar, and (he forbade) the meat of domestic donkeys.

حضرت علی رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ خیبر کے دن رسول اللہﷺنے عورتوں سے متعہ کرنے اور پالتو گدھوں کا گوشت کھانے سے منع فرمادیا تھا۔


وَحَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ نُمَيْرٍ حَدَّثَنَا أَبِى حَدَّثَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ عَنِ ابْنِ شِهَابٍ عَنِ الْحَسَنِ وَعَبْدِ اللَّهِ ابْنَىْ مُحَمَّدِ بْنِ عَلِىٍّ عَنْ أَبِيهِمَا عَنْ عَلِىٍّ أَنَّهُ سَمِعَ ابْنَ عَبَّاسٍ يُلَيِّنُ فِى مُتْعَةِ النِّسَاءِ فَقَالَ مَهْلاً يَا ابْنَ عَبَّاسٍ فَإِنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- نَهَى عَنْهَا يَوْمَ خَيْبَرَ وَعَنْ لُحُومِ الْحُمُرِ الإِنْسِيَّةِ.

It was narrated from 'Ali that he heard Ibn 'Abbas being lenient about Mut'ah marriage with women. He said: "Wait a minute, O Ibn 'Abbas! The Messenger of Allah (s.a.w) forbade it on the Day of Khaibar and (he forbade) the meat of domestic donkeys."

محمد بن علی کہتے ہیں کہ حضرت علی رضی اللہ عنہ نے سنا کہ حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ عورتوں سے متعہ کے بارے میں نرم گوشہ رکھتے ہیں ، تو حضرت علی رضی اللہ عنہ نے فرمایا: اے ابن عباس رضی اللہ عنہ ! ٹھہرو! رسول اللہﷺنے خیبر کے دن متعہ کرنے اور پالتو گدھوں کو کھانے سے منع فرمادیاتھا۔


وَحَدَّثَنِى أَبُو الطَّاهِرِ وَحَرْمَلَةُ بْنُ يَحْيَى قَالاَ أَخْبَرَنَا ابْنُ وَهْبٍ أَخْبَرَنِى يُونُسُ عَنِ ابْنِ شِهَابٍ عَنِ الْحَسَنِ وَعَبْدِ اللَّهِ ابْنَىْ مُحَمَّدِ بْنِ عَلِىِّ بْنِ أَبِى طَالِبٍ عَنْ أَبِيهِمَا أَنَّهُ سَمِعَ عَلِىَّ بْنَ أَبِى طَالِبٍ يَقُولُ لاِبْنِ عَبَّاسٍ نَهَى رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- عَنْ مُتْعَةِ النِّسَاءِ يَوْمَ خَيْبَرَ وَعَنْ أَكْلِ لُحُومِ الْحُمُرِ الإِنْسِيَّةِ.

'Ali bin Abi 'Talib said to Ibn 'Abbas: "The Messenger of Allah * forbade Mut'ah marriage with women on the Day of Khaibar, and (he forbade) the meat of domestic donkeys."

محمد بن علی کہتے ہیں کہ حضرت علی رضی اللہ عنہ نے حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سے فرمایا: خیبر کے دن رسول اللہﷺنے عورتوں کے ساتھ متعہ کرنے اور پالتو گدھوں کا گوشت کھانے سے منع فرمادیا تھا۔

Chapter No: 4

باب تَحْرِيمِ الْجَمْعِ بَيْنَ الْمَرْأَةِ وَعَمَّتِهَا أَوْ خَالَتِهَا فِي النِّكَاحِ

About the prohibition from combining a woman and her parental aunt or maternal aunt at the same time

ایک عورت اور اسکی پھوپھی یا خالہ کو ایک نکاح میں جمع کرنے کی حرمت

حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مَسْلَمَةَ الْقَعْنَبِىُّ حَدَّثَنَا مَالِكٌ عَنْ أَبِى الزِّنَادِ عَنِ الأَعْرَجِ عَنْ أَبِى هُرَيْرَةَ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ « لاَ يُجْمَعُ بَيْنَ الْمَرْأَةِ وَعَمَّتِهَا وَلاَ بَيْنَ الْمَرْأَةِ وَخَالَتِهَا ».

It was narrated that Abu Hurairah said: "The Messenger of Allah (s.a.w) said: 'One should not be married to a woman and her paternal aunt, or a woman and her maternal aunt, at the same time."'

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے فرمایا: بھتیجی اور پھوپھی کو ، اور بھانجی اور خالہ کو ایک ساتھ نکاح میں اکھٹا نہیں کیا جاسکتا۔


وَحَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ رُمْحِ بْنِ الْمُهَاجِرِ أَخْبَرَنَا اللَّيْثُ عَنْ يَزِيدَ بْنِ أَبِى حَبِيبٍ عَنْ عِرَاكِ بْنِ مَالِكٍ عَنْ أَبِى هُرَيْرَةَ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- نَهَى عَنْ أَرْبَعِ نِسْوَةٍ أَنْ يُجْمَعَ بَيْنَهُنَّ الْمَرْأَةِ وَعَمَّتِهَا وَالْمَرْأَةِ وَخَالَتِهَا.

It was narrated from Abu Hurairah that the Messenger of Allah (s.a.w) forbade being married to four women at the same time: A woman and her paternal aunt, and a woman and her maternal aunt.

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے چار عورتوں کو نکاح میں اکھٹا کرنے سے منع فرمایا: بھتیجی اور اس کی پھوپھی ، اور بھانجی اور اس کی خالہ ۔


وَحَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مَسْلَمَةَ بْنِ قَعْنَبٍ حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّحْمَنِ بْنُ عَبْدِ الْعَزِيزِ - قَالَ ابْنُ مَسْلَمَةَ مَدَنِىٌّ مِنَ الأَنْصَارِ مِنْ وَلَدِ أَبِى أُمَامَةَ بْنِ سَهْلِ بْنِ حُنَيْفٍ - عَنِ ابْنِ شِهَابٍ عَنْ قَبِيصَةَ بْنِ ذُؤَيْبٍ عَنْ أَبِى هُرَيْرَةَ قَالَ سَمِعْتُ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- يَقُولُ « لاَ تُنْكَحُ الْعَمَّةُ عَلَى بِنْتِ الأَخِ وَلاَ ابْنَةُ الأُخْتِ عَلَى الْخَالَةِ ».

It was narrated that Abu Hurairah said: "I heard the Messenger of Allah (s.a.w) say: 'Do not marry a paternal aunt when you are already married to her brother's daughter, and do not marry the sister's daughter when you are already married to the maternal aunt."'

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ میں نے رسول اللہ ﷺکو فرماتے ہوئے سنا: آپﷺنے فرمایا: بھتیجی کی موجودگی میں پھوپھی سے نکاح نہ کیا جائے،اور خالہ کی موجودگی میں بھانجی سے نکاح نہ کیا جائے۔


وَحَدَّثَنِى حَرْمَلَةُ بْنُ يَحْيَى أَخْبَرَنَا ابْنُ وَهْبٍ أَخْبَرَنِى يُونُسُ عَنِ ابْنِ شِهَابٍ أَخْبَرَنِى قَبِيصَةُ بْنُ ذُؤَيْبٍ الْكَعْبِىُّ أَنَّهُ سَمِعَ أَبَا هُرَيْرَةَ يَقُولُ نَهَى رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- أَنْ يَجْمَعَ الرَّجُلُ بَيْنَ الْمَرْأَةِ وَعَمَّتِهَا وَبَيْنَ الْمَرْأَةِ وَخَالَتِهَا. قَالَ ابْنُ شِهَابٍ فَنُرَى خَالَةَ أَبِيهَا وَعَمَّةَ أَبِيهَا بِتِلْكَ الْمَنْزِلَةِ.

Abu Hurairah said: "The Messenger of Allah (s.a.w) forbade a man to be married to a woman and her paternal aunt, or to a woman and her maternal aunt." Ibn Shihab said: "We think that the maternal aunt of her father and the paternal aunt of her father come under the same ruling."

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے منع فرمایا کہ کوئی آدمی کسی عورت اور اس کی پھوپھی کو (نکاح) میں جمع کرے، اور اسی طرح کسی عورت او راس کی خالہ کو (نکاح) میں جمع کرے۔ابن شہاب زہری کہتے ہیں کہ ہمارا خیال یہ ہے کہ بیوی کے والد کی پھوپھی اور بیوی کے والد کی خالہ کا بھی یہی حکم ہے۔


وَحَدَّثَنِى أَبُو مَعْنٍ الرَّقَاشِىُّ حَدَّثَنَا خَالِدُ بْنُ الْحَارِثِ حَدَّثَنَا هِشَامٌ عَنْ يَحْيَى أَنَّهُ كَتَبَ إِلَيْهِ عَنْ أَبِى سَلَمَةَ عَنْ أَبِى هُرَيْرَةَ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- « لاَ تُنْكَحُ الْمَرْأَةُ عَلَى عَمَّتِهَا وَلاَ عَلَى خَالَتِهَا ».

It was narrated that Abu Hurairah said: "The Messenger of Allah (s.a.w) said: 'A man should not be married to a woman and her paternal aunt or maternal aunt at the same time."'

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنےفرمایا: اس عورت سے شادی نہیں کی جاسکتی جس کی پھوپھی یا خالہ (پہلے سے) نکاح میں ہو۔


وَحَدَّثَنِى إِسْحَاقُ بْنُ مَنْصُورٍ حَدَّثَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ بْنُ مُوسَى عَنْ شَيْبَانَ عَنْ يَحْيَى حَدَّثَنِى أَبُو سَلَمَةَ أَنَّهُ سَمِعَ أَبَا هُرَيْرَةَ يَقُولُ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- بِمِثْلِهِ.

Abu Hurairah said: "The Messenger of Allah (s.a.w) said ..." a similar Hadith (as no. 3440).

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنےفرمایا: اس کے بعد مذکورہ بالا حدیث کی طرح ہے۔


حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا أَبُو أُسَامَةَ عَنْ هِشَامٍ عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ سِيرِينَ عَنْ أَبِى هُرَيْرَةَ عَنِ النَّبِىِّ -صلى الله عليه وسلم- قَالَ « لاَ يَخْطُبُ الرَّجُلُ عَلَى خِطْبَةِ أَخِيهِ وَلاَ يَسُومُ عَلَى سَوْمِ أَخِيهِ وَلاَ تُنْكَحُ الْمَرْأَةُ عَلَى عَمَّتِهَا وَلاَ عَلَى خَالَتِهَا وَلاَ تَسْأَلُ الْمَرْأَةُ طَلاَقَ أُخْتِهَا لِتَكْتَفِئَ صَحْفَتَهَا وَلْتَنْكِحْ فَإِنَّمَا لَهَا مَا كَتَبَ اللَّهُ لَهَا ».

It was narrated from Abu Hurairah that the Prophet (s.a.w) said: "A man should not propose marriage to a woman to whom his brother has already proposed, and he should not outbid his brother. A man should not marry a woman if he is already married to her paternal aunt or maternal aunt. A woman should not ask for her sister to be divorced so as to deprive her of what is rightfully hers, and so that she may be married in her stead; rather she will have what Allah has decreed for her."

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی ﷺنے فرمایا: کوئی آدمی اپنے بھائی کے پیغام نکاح پر نکاح کا پیغام نہ دے ، اور اپنے بھائی کی لگائی ہوئی قیمت پر قیمت نہ لگائے ، اور کسی عورت سے نکاح اس کی پھوپھی یا خالہ کے (نکاح میں ) ہوتے ہوئے نہ کیا جائے، اور کوئی عورت اپنی سوکن کی طلاق کا مطالبہ نہ کرے تاکہ اس کے برتن کو اپنے لیے خاص کرے، وہ نکاح کرلے جو اس کے لیے مقدر ہوگا وہ اس سے مل جائے گا۔


وَحَدَّثَنِى مُحْرِزُ بْنُ عَوْنِ بْنِ أَبِى عَوْنٍ حَدَّثَنَا عَلِىُّ بْنُ مُسْهِرٍ عَنْ دَاوُدَ بْنِ أَبِى هِنْدٍ عَنِ ابْنِ سِيرِينَ عَنْ أَبِى هُرَيْرَةَ قَالَ نَهَى رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- أَنْ تُنْكَحَ الْمَرْأَةُ عَلَى عَمَّتِهَا أَوْ خَالَتِهَا أَوْ أَنْ تَسْأَلَ الْمَرْأَةُ طَلاَقَ أُخْتِهَا لِتَكْتَفِئَ مَا فِى صَحْفَتِهَا فَإِنَّ اللَّهَ عَزَّ وَجَلَّ رَازِقُهَا.

It was narrated that Abu Hurairah said: "The Messenger of Allah (s.a.w) forbade marrying a woman when one is already married to her paternal aunt or maternal aunt, (and he forbade) a woman asking for her sister to be divorced so as to deprive her of what is rightfully hers and take it for herself, for Allah [the Mighty and Sublime] is her Sustainer."

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے منع فرمایا: کہ کسی عورت سے نکاح اس کی پھوپھی یا خالہ کے ہوتے ہوئے کیا جائے، یا کوئی عورت اپنی سوکن کی طلاق کا مطالبہ کرے تاکہ اس کے برتن کو اپنے لیے خاص کرے، ، کیونکہ اللہ تعالی اس کا رازق ہے۔


حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ الْمُثَنَّى وَابْنُ بَشَّارٍ وَأَبُو بَكْرِ بْنُ نَافِعٍ - وَاللَّفْظُ لاِبْنِ الْمُثَنَّى وَابْنِ نَافِعٍ - قَالُوا أَخْبَرَنَا ابْنُ أَبِى عَدِىٍّ عَنْ شُعْبَةَ عَنْ عَمْرِو بْنِ دِينَارٍ عَنْ أَبِى سَلَمَةَ عَنْ أَبِى هُرَيْرَةَ قَالَ نَهَى رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- أَنْ يُجْمَعَ بَيْنَ الْمَرْأَةِ وَعَمَّتِهَا وَبَيْنَ الْمَرْأَةِ وَخَالَتِهَا.

It was narrated that Abu Hurairah said: "The Messenger of Allah (s.a.w) forbade being married to a woman and her paternal aunt or maternal aunt at the same time."

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے منع فرمایا: کہ کسی عورت اور اس کی پھوپھی کو نکاح میں جمع کیا جائے ، یا کسی عورت اور اس کی خالہ کو نکاح میں جمع کیا جائے۔


وَحَدَّثَنِى مُحَمَّدُ بْنُ حَاتِمٍ حَدَّثَنَا شَبَابَةُ حَدَّثَنَا وَرْقَاءُ عَنْ عَمْرِو بْنِ دِينَارٍ بِهَذَا الإِسْنَادِ مِثْلَهُ.

A similar report (as no. 3444) was narrated from 'Amr bin Dinar with this chain.

ایک اور سند سے بھی مذکورہ بالا حدیث مروی ہے۔

Chapter No: 5

باب تَحْرِيمِ نِكَاحِ الْمُحْرِمِ وَكَرَاهَةِ خِطْبَتِهِ

About the forbiddance of marriage for Muhrim and it is disproved for him to propose marriage

حالت احرام میں نکاح کی حرمت اور پیغام نکاح کی کراہت

حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ يَحْيَى قَالَ قَرَأْتُ عَلَى مَالِكٍ عَنْ نَافِعٍ عَنْ نُبَيْهِ بْنِ وَهْبٍ أَنَّ عُمَرَ بْنَ عُبَيْدِ اللَّهِ أَرَادَ أَنْ يُزَوِّجَ طَلْحَةَ بْنَ عُمَرَ بِنْتَ شَيْبَةَ بْنِ جُبَيْرٍ فَأَرْسَلَ إِلَى أَبَانِ بْنِ عُثْمَانَ يَحْضُرُ ذَلِكَ وَهُوَ أَمِيرُ الْحَجِّ فَقَالَ أَبَانٌ سَمِعْتُ عُثْمَانَ بْنَ عَفَّانَ يَقُولُ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- « لاَ يَنْكِحُ الْمُحْرِمُ وَلاَ يُنْكَحُ وَلاَ يَخْطُبُ ».

It was narrated from Nubaih bin Wahb that 'Umar bin 'Ubaidullah wanted to marry Talhah bin 'Umar to the daughter of Shaibah bin Jubair, and he sent for Aban bin 'Uthman, who was the Commander of Hajj, to attend the wedding. Aban said: "I heard 'Uthman bin 'Affan say: 'The Messenger of Allah (s.a.w) said: The Muhrim should not get married, have a marriage arranged for him, nor propose marriage."'

نبیہ بن وہب سے روایت ہے کہ عمر بن عبید اللہ نے طلحہ بن عمر کا شیبہ بن جبیر کی بیٹی سے نکاح کرنے کا ارادہ کیا تو انہوں نے ابان بن عثمان کے پاس ایک قاصد بھیجا جو اس وقت امیر حج تھے ، ابان نے آکر کہا: میں نے حضرت عثمان بن عفان رضی اللہ عنہ سے سنا وہ فرماتے تھے : رسول اللہﷺنے فرمایا: محرم نہ اپنا نکاح کرے ، اور نہ کسی اور کا ، اور نہ ہی نکاح کا پیغام دے۔


وَحَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ أَبِى بَكْرٍ الْمُقَدَّمِىُّ حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ زَيْدٍ عَنْ أَيُّوبَ عَنْ نَافِعٍ حَدَّثَنِى نُبَيْهُ بْنُ وَهْبٍ قَالَ بَعَثَنِى عُمَرُ بْنُ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ مَعْمَرٍ وَكَانَ يَخْطُبُ بِنْتَ شَيْبَةَ بْنِ عُثْمَانَ عَلَى ابْنِهِ فَأَرْسَلَنِى إِلَى أَبَانِ بْنِ عُثْمَانَ وَهُوَ عَلَى الْمَوْسِمِ فَقَالَ أَلاَ أُرَاهُ أَعْرَابِيًّا « إِنَّ الْمُحْرِمَ لاَ يَنْكِحُ وَلاَ يُنْكَحُ ». أَخْبَرَنَا بِذَلِكَ عُثْمَانُ عَنْ رَسُولِ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم-.

Nubaih. bin Wahb said: "'Umar bin 'Ubaidullah bin Ma'mar, who had proposed the marriage of his son to the daughter of Shaibah bin 'Uthman, sent me to Aban bin 'Uthman who was in charge of the Hajj. He said: 'I regard him as no more than a Bedouin, for; "The Muhrim should not get married nor have a marriage arranged for him." 'Uthman narrated that to us from the Messenger of Allah (s.a.w).'"

نبیہ بن وہب سے روایت ہے کہ عمر بن عبید اللہ بن معمر اپنے بیٹے کی منگنی شیبہ بن عثمان کی بیٹی سے کرنا چاہتے تھے ،تو انہوں نے مجھے ابان بن عثمان کے پاس بھیجا جو حج کے امیر تھے ، انہوں نے کہا : میرا خیال ہے کہ وہ دیہاتی ہے ، کیونکہ محرم نہ تو خود نکاح کرسکتا ہے اور نہ ہی دوسرے کا کرا سکتا ہے ۔حضرت عثمان رضی اللہ عنہ نے ہمیں رسول اللہ ﷺسے اسی طرح روایت کیا ہے ۔


وَحَدَّثَنِى أَبُو غَسَّانَ الْمِسْمَعِىُّ حَدَّثَنَا عَبْدُ الأَعْلَى ح وَحَدَّثَنِى أَبُو الْخَطَّابِ زِيَادُ بْنُ يَحْيَى حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ سَوَاءٍ قَالاَ جَمِيعًا حَدَّثَنَا سَعِيدٌ عَنْ مَطَرٍ وَيَعْلَى بْنِ حَكِيمٍ عَنْ نَافِعٍ عَنْ نُبَيْهِ بْنِ وَهْبٍ عَنْ أَبَانِ بْنِ عُثْمَانَ عَنْ عُثْمَانَ بْنِ عَفَّانَ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- قَالَ « لاَ يَنْكِحُ الْمُحْرِمُ وَلاَ يُنْكَحُ وَلاَ يَخْطُبُ ».

It was narrated from Nubaih bin Wahb, from Aban bin 'Uthman, from 'Uthman bin 'Affan, that the Messenger of Allah (s.a.w) said: "The Muhrim should not get married, have a marriage arranged for him, nor propose marriage."

حضرت عثمان بن عفان رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے فرمایا: محرم اپنا نکاح نہیں کرسکتا ، اور نہ کسی کا کراسکتا ہے ، اور نہ نکاح کا پیغام دے سکتا ہے۔


وَحَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ وَعَمْرٌو النَّاقِدُ وَزُهَيْرُ بْنُ حَرْبٍ جَمِيعًا عَنِ ابْنِ عُيَيْنَةَ - قَالَ زُهَيْرٌ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ بْنُ عُيَيْنَةَ - عَنْ أَيُّوبَ بْنِ مُوسَى عَنْ نُبَيْهِ بْنِ وَهْبٍ عَنْ أَبَانِ بْنِ عُثْمَانَ عَنْ عُثْمَانَ يَبْلُغُ بِهِ النَّبِىَّ -صلى الله عليه وسلم- قَالَ « الْمُحْرِمُ لاَ يَنْكِحُ وَلاَ يَخْطُبُ ».

It was narrated from Nubaih bin Wahb, from Aban bin 'Uthman, from 'Uthman, that the Prophet (s.a.w) said: "The Muhrim should not get married nor have a marriage arranged for him."

حضرت عثمان بن عفان رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے فرمایا: محرم نہ نکاح کرسکتا ہے اور نہ نکاح کا پیغام دے سکتا ہے۔


حَدَّثَنَا عَبْدُ الْمَلِكِ بْنُ شُعَيْبِ بْنِ اللَّيْثِ حَدَّثَنِى أَبِى عَنْ جَدِّى حَدَّثَنِى خَالِدُ بْنُ يَزِيدَ حَدَّثَنِى سَعِيدُ بْنُ أَبِى هِلاَلٍ عَنْ نُبَيْهِ بْنِ وَهْبٍ أَنَّ عُمَرَ بْنَ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ مَعْمَرٍ أَرَادَ أَنْ يُنْكِحَ ابْنَهُ طَلْحَةَ بِنْتَ شَيْبَةَ بْنِ جُبَيْرٍ فِى الْحَجِّ وَأَبَانُ بْنُ عُثْمَانَ يَوْمَئِذٍ أَمِيرُ الْحَاجِّ فَأَرْسَلَ إِلَى أَبَانٍ إِنِّى قَدْ أَرَدْتُ أَنْ أُنْكِحَ طَلْحَةَ بْنَ عُمَرَ فَأُحِبُّ أَنْ تَحْضُرَ ذَلِكَ. فَقَالَ لَهُ أَبَانٌ أَلاَ أُرَاكَ عِرَاقِيًّا جَافِيًا إِنِّى سَمِعْتُ عُثْمَانَ بْنَ عَفَّانَ يَقُولُ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- « لاَ يَنْكِحُ الْمُحْرِمُ ».

It was narrated from Nubaih bin Wahb, that 'Umar bin 'Ubaidullah bin Ma'mar wanted to marry his son Talhah to the daughter of Shaibah bin Jubair during the Hajj. At that time Aban bin 'Uthman was the Commander of Hajj. He sent word to Aban saying: "I would like to arrange the marriage of Talhah bin 'Umar and I would like you to attend." Aban said to him: "I think you are no more than an ill-mannered 'Iraqi. I heard 'Uthman bin 'Affan say: 'The Messenger of Allah (s.a.w) said: The Muhrim should not get married."'

نبیہ بن وہب سے روایت ہے کہ عمر بن عبید اللہ بن معمر کی خواہش تھی کہ اپنے بیٹے طلحہ کی شادی حج کے دوران شیبہ بن جبیر کی بیٹی سے کردیں۔اس وقت ابان بن عثمان حج کے امیر تھے ، چناچہ عمر بن عبید اللہ نے مجھے ابان کے پاس یہ پیغام دے کر بھیجا کہ میں طلحہ کا نکاح کرنا چاہتا ہوں اور پسند کروں گا کہ آپ بھی اس میں شرکت کریں، حضرت ابان نے فرمایا: میں آپ کو بے وقوف عراقی خیال کرتا ہوں کیونکہ میں نے حضرت عثمان بن عفان رضی اللہ عنہ سے سنا وہ فرماتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺنے فرمایا: محرم نکاح نہ کرے۔


وَحَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ وَابْنُ نُمَيْرٍ وَإِسْحَاقُ الْحَنْظَلِىُّ جَمِيعًا عَنِ ابْنِ عُيَيْنَةَ - قَالَ ابْنُ نُمَيْرٍ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ بْنُ عُيَيْنَةَ - عَنْ عَمْرِو بْنِ دِينَارٍ عَنْ أَبِى الشَّعْثَاءِ أَنَّ ابْنَ عَبَّاسٍ أَخْبَرَهُ أَنَّ النَّبِىَّ -صلى الله عليه وسلم- تَزَوَّجَ مَيْمُونَةَ وَهُوَ مُحْرِمٌ. زَادَ ابْنُ نُمَيْرٍ فَحَدَّثْتُ بِهِ الزُّهْرِىَّ فَقَالَ أَخْبَرَنِى يَزِيدُ بْنُ الأَصَمِّ أَنَّهُ نَكَحَهَا وَهُوَ حَلاَلٌ.

It was narrated from Abu Ash-Sha'tha' that Ibn 'Abbas told him, that the Prophet (s.a.w) married Maimunah while he was in Ihram. Ibn Numair added: "I narrated that to Az-Zuhri and he said: 'Yazid bin Al-Asamm told me that he married her when he was not in Ihram."

حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے حالت احرام میں حضرت میمونہ سے شادی کی ،ابن نمیر کی روایت میں یہ اضافہ ہے کہ زہری نے کہا : مجھے یزید بن اصم نے بتایا کہ رسول اللہ ﷺنے حلال ہونے کی حالت میں نکاح کیا تھا۔


وَحَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ يَحْيَى أَخْبَرَنَا دَاوُدُ بْنُ عَبْدِ الرَّحْمَنِ عَنْ عَمْرِو بْنِ دِينَارٍ عَنْ جَابِرِ بْنِ زَيْدٍ أَبِى الشَّعْثَاءِ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ أَنَّهُ قَالَ تَزَوَّجَ رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- مَيْمُونَةَ وَهُوَ مُحْرِمٌ.

It was narrated that Ibn 'Abbas said: "The Messenger of Allah (s.a.w) married Maimunah when he was in Ihram."

حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے حالت احرام میں حضرت میمونہ سے شادی کی ۔


حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ آدَمَ حَدَّثَنَا جَرِيرُ بْنُ حَازِمٍ حَدَّثَنَا أَبُو فَزَارَةَ عَنْ يَزِيدَ بْنِ الأَصَمِّ حَدَّثَتْنِى مَيْمُونَةُ بِنْتُ الْحَارِثِ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- تَزَوَّجَهَا وَهُوَ حَلاَلٌ قَالَ وَكَانَتْ خَالَتِى وَخَالَةَ ابْنِ عَبَّاسٍ.

It was narrated from Yazid bin Al-Asamm: "Maimunah bint Al-Harith told me that the Messenger of Allah (s.a.w) married her when he was not in Ihram." He said: "She was my maternal aunt and the maternal aunt of Ibn 'Abbas."

یزید بن اصم کہتے ہیں کہ حضرت میمونہ بنت حارث رضی اللہ عنہا نے مجھے بتایا کہ رسول اللہ ﷺنےان سے حلال ہونے کی حالت میں نکاح کیا ،حضرت میمونہ میری اور حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ کی خالہ تھیں۔

Chapter No: 6

باب تَحْرِيمِ الْخِطْبَةِ عَلَى خِطْبَةِ أَخِيهِ حَتَّى يَأْذَنَ أَوْ يَتْرُكَ

About the forbiddance of proposing marriage over the proposal of one’s brother unless he gives permission or leaves idea

بلا اجازت کسی کی منگنی پر منگنی کرنے کی ممانعت

وَحَدَّثَنَا قُتَيْبَةُ بْنُ سَعِيدٍ حَدَّثَنَا لَيْثٌ ح وَحَدَّثَنَا ابْنُ رُمْحٍ أَخْبَرَنَا اللَّيْثُ عَنْ نَافِعٍ عَنِ ابْنِ عُمَرَ عَنِ النَّبِىِّ -صلى الله عليه وسلم- قَالَ « لاَ يَبِعْ بَعْضُكُمْ عَلَى بَيْعِ بَعْضٍ وَلاَ يَخْطُبْ بَعْضُكُمْ عَلَى خِطْبَةِ بَعْضٍ ».

It was narrated from Ibn 'Umar that the Prophet (s.a.w) said: "Do not outbid one another, and do not propose marriage when someone else has already proposed."

حضرت ابن عمررضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی ﷺنے فرمایا: تم میں سے کوئی آدمی دوسرے کے سودے پر سودا نہ کرے ، اور نہ دوسرے کی منگنی پر منگنی کرے ۔


وَحَدَّثَنِى زُهَيْرُ بْنُ حَرْبٍ وَمُحَمَّدُ بْنُ الْمُثَنَّى جَمِيعًا عَنْ يَحْيَى الْقَطَّانِ قَالَ زُهَيْرٌ حَدَّثَنَا يَحْيَى عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ أَخْبَرَنِى نَافِعٌ عَنِ ابْنِ عُمَرَ عَنِ النَّبِىِّ -صلى الله عليه وسلم- قَالَ « لاَ يَبِعِ الرَّجُلُ عَلَى بَيْعِ أَخِيهِ وَلاَ يَخْطُبْ عَلَى خِطْبَةِ أَخِيهِ إِلاَّ أَنْ يَأْذَنَ لَهُ ».

It was narrated from Ibn 'Umar that the Prophet (s.a.w) said: "No man should outbid his brother, nor should he propose marriage when his brother has already proposed, unless he gives him permission."

حضرت ابن عمررضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی ﷺنے فرمایا: کوئی آدمی اپنے بھائی کے سودے پر سودا نہ کرے ، اور نہ کوئی آدمی اپنے بھائی کی اجازت کے بغیر اپنے بھائی کی منگنی پر منگنی کرے ۔


وَحَدَّثَنَاهُ أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا عَلِىُّ بْنُ مُسْهِرٍ عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بِهَذَا الإِسْنَادِ.

It was narrated from 'Ubaidullah with this chain (a Hadith similar to no. 3455).

ایک اور سند سے بھی اسی طرح مروی ہے۔


وَحَدَّثَنِيهِ أَبُو كَامِلٍ الْجَحْدَرِىُّ حَدَّثَنَا حَمَّادٌ حَدَّثَنَا أَيُّوبُ عَنْ نَافِعٍ بِهَذَا الإِسْنَادِ.

It was narrated from Nafi' with this chain (a Hadith similar to no. 3455).

ایک دیگر سند سےبھی اسی طرح مروی ہے۔


وَحَدَّثَنِى عَمْرٌو النَّاقِدُ وَزُهَيْرُ بْنُ حَرْبٍ وَابْنُ أَبِى عُمَرَ قَالَ زُهَيْرٌ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ بْنُ عُيَيْنَةَ عَنِ الزُّهْرِىِّ عَنْ سَعِيدٍ عَنْ أَبِى هُرَيْرَةَ أَنَّ النَّبِىَّ -صلى الله عليه وسلم- نَهَى أَنْ يَبِيعَ حَاضِرٌ لِبَادٍ أَوْ يَتَنَاجَشُوا أَوْ يَخْطُبَ الرَّجُلُ عَلَى خِطْبَةِ أَخِيهِ أَوْ يَبِيعَ عَلَى بَيْعِ أَخِيهِ وَلاَ تَسْأَلِ الْمَرْأَةُ طَلاَقَ أُخْتِهَا لِتَكْتَفِئَ مَا فِى إِنَائِهَا أَوْ مَا فِى صَحْفَتِهَا. زَادَ عَمْرٌو فِى رِوَايَتِهِ وَلاَ يَسُمِ الرَّجُلُ عَلَى سَوْمِ أَخِيهِ.

It was narrated from Abu Hurairah that the Prophet (s.a.w) forbade a town-dweller to sell on behalf of a Bedouin, or artificially inflating prices, or a man to propose when his brother has already proposed, or outbidding one's brother, or a woman to ask for her sister to be divorced so as to deprive her of what is rightfully hers and take it for herself.

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سےروایت ہے کہ نبی ﷺنے منع فرمایا ہے کہ شہری دیہاتی کا مال (شہر کا نرخ بتائے بغیر) بیچے ، یا یہ کہ ایک دوسرے کو پھانسنے کے لیے کسی چیز کی قیمت بڑھائے ، یا یہ کہ کوئی آدمی اپنے بھائی کی منگنی پر منگنی کرے ، یا یہ کہ اپنے بھائی کے سودے پر سودا کرے ۔اور کوئی عورت اپنی بہن (سوکن) کے طلاق کا مطالبہ نہ کرے تاکہ جو کچھ اس کے برتن میں ہے اس سے انڈیل لے ، اور عمرو کی روایت میں یہ اضافہ ہے کہ کوئی آدمی اپنے بھائی کی قیمت پر قیمت نہ لگائے۔


وَحَدَّثَنِى حَرْمَلَةُ بْنُ يَحْيَى أَخْبَرَنَا ابْنُ وَهْبٍ أَخْبَرَنِى يُونُسُ عَنِ ابْنِ شِهَابٍ حَدَّثَنِى سَعِيدُ بْنُ الْمُسَيَّبِ أَنَّ أَبَا هُرَيْرَةَ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- « لاَ تَنَاجَشُوا وَلاَ يَبِعِ الْمَرْءُ عَلَى بَيْعِ أَخِيهِ وَلاَ يَبِعْ حَاضِرٌ لِبَادٍ وَلاَ يَخْطُبِ الْمَرْءُ عَلَى خِطْبَةِ أَخِيهِ وَلاَ تَسْأَلِ الْمَرْأَةُ طَلاَقَ الأُخْرَى لِتَكْتَفِئَ مَا فِى إِنَائِهَا ».

Abu Hurairah said: "The Messenger of Allah (s.a.w) said: 'Do not artificially inflate prices; no man should outbid his brother, and no town dweller should sell on behalf of a Bedouin, and no man should propose marriage when his brother has already proposed, and no woman should ask for her sister to be divorced so as to deprive her of what is rightfully hers and take it for herself."'

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سےروایت ہے کہ رسول اللہﷺنے فرمایا : آپس میں نجش نہ کرو (ایک دوسرے کو پھانسنے کے لیے کسی چیز کی قیمت بڑھانے کو کہتے ہیں) اور کوئی شخص اپنے بھائی کے سودے پر سودا نہ کرے ،اور شہری دیہاتی کا مال (بھاؤ بتائے بغیر) نہ بیچے ، اور کوئی آدمی اپنے بھائی کی منگنی پر منگنی نہ کرے ،اور کوئی عورت دوسری کے طلاق کا مطالبہ نہ کرے تاکہ جو کچھ بھی اس کے برتن میں ہے اسے اپنے لیے انڈیل لے۔


وَحَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا عَبْدُ الأَعْلَى ح وَحَدَّثَنِى مُحَمَّدُ بْنُ رَافِعٍ حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّزَّاقِ جَمِيعًا عَنْ مَعْمَرٍ عَنِ الزُّهْرِىِّ بِهَذَا الإِسْنَادِ. مِثْلَهُ غَيْرَ أَنَّ فِى حَدِيثِ مَعْمَرٍ « وَلاَ يَزِدِ الرَّجُلُ عَلَى بَيْعِ أَخِيهِ ».

A similar report (as no. 3459) was narrated from Az-Zuhri with this chain, except that in the Hadith of Ma'mar it says: "And no man should outbid his brother."

ایک اور سندسے بھی اسی طرح مروی ہے اس میں یہ اضافہ ہے کہ کوئی آدمی اپنے بھائی کے سودے پر قیمت نہ بڑھائے۔


حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ أَيُّوبَ وَقُتَيْبَةُ وَابْنُ حُجْرٍ جَمِيعًا عَنْ إِسْمَاعِيلَ بْنِ جَعْفَرٍ - قَالَ ابْنُ أَيُّوبَ حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيلُ-أَخْبَرَنِى الْعَلاَءُ عَنْ أَبِيهِ عَنْ أَبِى هُرَيْرَةَ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ-صلى الله عليه وسلم-قَالَ « لاَ يَسُمِ الْمُسْلِمُ عَلَى سَوْمِ أَخِيهِ وَلاَ يَخْطُبْ عَلَى خِطْبَتِهِ ».

It was narrated from Abu Hurairah that the Messenger of Allah (s.a.w) said: "No Muslim should offer a higher price than his brother or propose marriage when another Muslim has already proposed marriage."

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے فرمایا: کوئی مسلمان دوسرے مسلمان کی قیمت پر قیمت مت لگائے اور نہ اس کی منگنی پر منگنی کرے۔


وَحَدَّثَنِى أَحْمَدُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ الدَّوْرَقِىُّ حَدَّثَنَا عَبْدُ الصَّمَدِ حَدَّثَنَا شُعْبَةُ عَنِ الْعَلاَءِ وَسُهَيْلٍ عَنْ أَبِيهِمَا عَنْ أَبِى هُرَيْرَةَ عَنِ النَّبِىِّ -صلى الله عليه وسلم.

It was narrated from Abu Hurairah from the Prophet (s.a.w) (a Hadith similar to no. 3461).

ایک اور سند سے بھی حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے ایسی ہی روایت ہے۔


وَحَدَّثَنَاهُ مُحَمَّدُ بْنُ الْمُثَنَّى حَدَّثَنَا عَبْدُ الصَّمَدِ حَدَّثَنَا شُعْبَةُ عَنِ الأَعْمَشِ عَنْ أَبِى صَالِحٍ عَنْ أَبِى هُرَيْرَةَ عَنِ النَّبِىِّ -صلى الله عليه وسلم- إِلاَّ أَنَّهُمْ قَالُوا « عَلَى سَوْمِ أَخِيهِ وَخِطْبَةِ أَخِيهِ ».

It was narrated from Shu'bah and others from Abu Hurairah from the Prophet (s.a.w) (a Hadith similar to no. 3461), except that they said: "... offer a higher price than his brother, or propose marriage when his brother has already proposed."

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی ﷺنے فرمایا: کوئی آدمی اپنے بھائی کی قیمت پر قیمت مت لگائے اور نہ اس کی منگنی پر منگنی کرے۔


وَحَدَّثَنِى أَبُو الطَّاهِرِ أَخْبَرَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ وَهْبٍ عَنِ اللَّيْثِ وَغَيْرِهِ عَنْ يَزِيدَ بْنِ أَبِى حَبِيبٍ عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ شُمَاسَةَ أَنَّهُ سَمِعَ عُقْبَةَ بْنَ عَامِرٍ عَلَى الْمِنْبَرِ يَقُولُ إِنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- قَالَ « الْمُؤْمِنُ أَخُو الْمُؤْمِنِ فَلاَ يَحِلُّ لِلْمُؤْمِنِ أَنْ يَبْتَاعَ عَلَى بَيْعِ أَخِيهِ وَلاَ يَخْطُبَ عَلَى خِطْبَةِ أَخِيهِ حَتَّى يَذَرَ ».

It was narrated from 'Abdur-Rahman bin Shumasah that he heard 'Uqbah bin 'Amir on the Minbar saying: "The Messenger of Allah (s.a.w) said: 'The believer is the brother of another believer, and it is not permissible for a believer to outbid his brother or propose marriage when his brother has already proposed, unless the latter gives up the idea."'

حضرت عبدالرحمن بن شماسہ سے روایت ہے انہوں نے عقبہ بن عامر کو منبر پر فرماتے ہوئے سنا کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : مومن مومن کا بھائی ہے کسی مومن کے لئے جائز نہیں کہ وہ اپنے بھائی کے سودے پر سودا کرے اور نہ اس کی منگنی پر منگنی کرے یہاں تک کہ وہ اسے چھوڑ نہ دے۔

Chapter No: 7

باب تَحْرِيمِ نِكَاحِ الشِّغَارِ وَبُطْلاَنِهِ

About the forbiddance and invalidity of Shighar marriage

وٹہ سٹہ کی حرمت اور اس کے باطل ہونے کا بیان

حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ يَحْيَى قَالَ قَرَأْتُ عَلَى مَالِكٍ عَنْ نَافِعٍ عَنِ ابْنِ عُمَرَ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- نَهَى عَنِ الشِّغَارِ. وَالشِّغَارُ أَنْ يُزَوِّجَ الرَّجُلُ ابْنَتَهُ عَلَى أَنْ يُزَوِّجَهُ ابْنَتَهُ وَلَيْسَ بَيْنَهُمَا صَدَاقٌ.

It was narrated from Ibn 'Umar that the Messenger of Allah (s.a.w) forbade Shighar marriage. Shighar is when a man gives his daughter in marriage to another man in return for marrying the latter's daughter, with no dowry given.

حضرت ابن عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ نبی کریمﷺ نے نکاح شغار سے منع فرمایا ہے اور شغار یہ ہے کہ آدمی اپنی بیٹی کا نکاح اس شرط پر کرے کہ وہ اپنی بیٹی کا نکاح اسے کر دے گا اور ان کے درمیان مہر مقرر نہ کیا جائے ۔


وَحَدَّثَنِى زُهَيْرُ بْنُ حَرْبٍ وَمُحَمَّدُ بْنُ الْمُثَنَّى وَعُبَيْدُ اللَّهِ بْنُ سَعِيدٍ قَالُوا حَدَّثَنَا يَحْيَى عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ عَنْ نَافِعٍ عَنِ ابْنِ عُمَرَ عَنِ النَّبِىِّ -صلى الله عليه وسلم-. بِمِثْلِهِ غَيْرَ أَنَّ فِى حَدِيثِ عُبَيْدِ اللَّهِ قَالَ قُلْتُ لِنَافِعٍ مَا الشِّغَارُ.

A similar report (as no. 3465) was narrated from Ibn 'Umar from the Prophet (s.a.w) except that in the Hadith of 'Ubaidullah it says: "I said to Nafi': 'What is Shighar?"'

ایک اور سند سے بھی مذکورہ بالا حدیث مروی ہے۔


وَحَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ يَحْيَى أَخْبَرَنَا حَمَّادُ بْنُ زَيْدٍ عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ السَّرَّاجِ عَنْ نَافِعٍ عَنِ ابْنِ عُمَرَ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- نَهَى عَنِ الشِّغَارِ.

It was narrated from Ibn 'Umar that the Messenger of Allah (s.a.w) forbade Shighar.

حضرت ابن عمر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسو ل اللہ ﷺنے نکاح شغار سے منع فرمایا ہے۔


وَحَدَّثَنِى مُحَمَّدُ بْنُ رَافِعٍ حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّزَّاقِ أَخْبَرَنَا مَعْمَرٌ عَنْ أَيُّوبَ عَنْ نَافِعٍ عَنِ ابْنِ عُمَرَ أَنَّ النَّبِىَّ -صلى الله عليه وسلم- قَالَ « لاَ شِغَارَ فِى الإِسْلاَمِ ».

It was narrated from Ibn 'Umar that the Prophet (s.a.w) said: "There is no Shighar in Islam."

حضرت ابن عمر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسو ل اللہ ﷺنے فرمایا: اسلام میں شغار نہیں ہے۔


حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا ابْنُ نُمَيْرٍ وَأَبُو أُسَامَةَ عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ عَنْ أَبِى الزِّنَادِ عَنِ الأَعْرَجِ عَنْ أَبِى هُرَيْرَةَ قَالَ نَهَى رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- عَنِ الشِّغَارِ. زَادَ ابْنُ نُمَيْرٍ وَالشِّغَارُ أَنْ يَقُولَ الرَّجُلُ لِلرَّجُلِ زَوِّجْنِى ابْنَتَكَ وَأُزَوِّجُكَ ابْنَتِى أَوْ زَوِّجْنِى أُخْتَكَ وَأُزَوِّجُكَ أُخْتِى.

It was narrated that Abu Hurairah said: "The Messenger of Allah (s.a.w) forbade Shighar." Ibn Numair added: "Shighar is when a man says to another: 'Give me your daughter in marriage and I will give you my daughter in marriage, or give me your sister in marriage and I will give you my sister in marriage."'

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سےروایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے شغار سے منع فرمایا،ابن نمیر کی روایت میں ہے کہ شغار یہ ہے کہ تم اپنی بیٹی کا نکاح مجھ سے کردو ، اور میں اپنی بیٹی کا نکاح تم سے کردوں گا ، یا کہے : تم اپنی بہن کانکاح مجھ سے کردو اور میں اپنی بہن کا نکاح تم سے کردوں گا۔


وَحَدَّثَنَاهُ أَبُو كُرَيْبٍ حَدَّثَنَا عَبْدَةُ عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ -وَهُوَ ابْنُ عُمَرَ-بِهَذَا الإِسْنَادِ وَلَمْ يَذْكُرْ زِيَادَةَ ابْنِ نُمَيْرٍ.

It was narrated from 'Ubaidullah [who is the son of 'Umar] with this chain (a Hadith similar to no. 3469), but he did not mention the addition of Ibn Numair.

ایک اور سند سے ایسی ہی روایت منقول ہے۔


وَحَدَّثَنِى هَارُونُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ حَدَّثَنَا حَجَّاجُ بْنُ مُحَمَّدٍ قَالَ قَالَ ابْنُ جُرَيْجٍ ح وَحَدَّثَنَاهُ إِسْحَاقُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ وَمُحَمَّدُ بْنُ رَافِعٍ عَنْ عَبْدِ الرَّزَّاقِ أَخْبَرَنَا ابْنُ جُرَيْجٍ أَخْبَرَنِى أَبُو الزُّبَيْرِ أَنَّهُ سَمِعَ جَابِرَ بْنَ عَبْدِ اللَّهِ يَقُولُ نَهَى رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- عَنِ الشِّغَارِ.

Jabir bin 'Abdullah said: "The Messenger of Allah (s.a.w) forbade Shighar."

حضرت جابر بن عبد اللہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے نکاح شغار سے منع فرمایا ہے۔

Chapter No: 8

باب الْوَفَاءِ بِالشُّرُوطِ فِي النِّكَاحِ

Regarding fulfillment of conditions set in the marriage

شرائط نکاح کا پورا کرنے کا بیان

حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ أَيُّوبَ حَدَّثَنَا هُشَيْمٌ ح وَحَدَّثَنَا ابْنُ نُمَيْرٍ حَدَّثَنَا وَكِيعٌ ح وَحَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا أَبُو خَالِدٍ الأَحْمَرُ ح وَحَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ الْمُثَنَّى حَدَّثَنَا يَحْيَى - وَهُوَ الْقَطَّانُ - عَنْ عَبْدِ الْحَمِيدِ بْنِ جَعْفَرٍ عَنْ يَزِيدَ بْنِ أَبِى حَبِيبٍ عَنْ مَرْثَدِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ الْيَزَنِىِّ عَنْ عُقْبَةَ بْنِ عَامِرٍ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- « إِنَّ أَحَقَّ الشَّرْطِ أَنْ يُوفَى بِهِ مَا اسْتَحْلَلْتُمْ بِهِ الْفُرُوجَ ». هَذَا لَفْظُ حَدِيثِ أَبِى بَكْرٍ وَابْنِ الْمُثَنَّى. غَيْرَ أَنَّ ابْنَ الْمُثَنَّى قَالَ « الشُّرُوطِ ».

It was narrated that 'Uqbah bin 'Amir said: "The Messenger of Allah (s.a.w) said: 'The condition which most deserves to be fulfilled is that by means of which intimacy becomes permissible for you."' This is the wording of the Hadith of Abu Bakr and Ibn Al-Muthanna, except that Ibn Al-Muthanna said: "conditions".

حضرت عقبہ بن عامر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے فرمایا: شرائط میں سب سے زیادہ پوری کی جانے کی مستحق جو شرط ہے وہ یہ ہے جس کی وجہ سے تم عورتوں کو اپنے لیے حلال کرتے ہو۔

Chapter No: 9

باب اسْتِئْذَانِ الثَّيِّبِ فِي النِّكَاحِ بِالنُّطْقِ وَالْبِكْرِ بِالسُّكُوتِ

About seeking consent of a previously married woman in words and a virgin by silence

بیوہ کا نکاح میں زبان سےاجازت دینے اور کنواری کے سکوت کا کافی ہونا۔

حَدَّثَنِى عُبَيْدُ اللَّهِ بْنُ عُمَرَ بْنِ مَيْسَرَةَ الْقَوَارِيرِىُّ حَدَّثَنَا خَالِدُ بْنُ الْحَارِثِ حَدَّثَنَا هِشَامٌ عَنْ يَحْيَى بْنِ أَبِى كَثِيرٍ حَدَّثَنَا أَبُو سَلَمَةَ حَدَّثَنَا أَبُو هُرَيْرَةَ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- قَالَ « لاَ تُنْكَحُ الأَيِّمُ حَتَّى تُسْتَأْمَرَ وَلاَ تُنْكَحُ الْبِكْرُ حَتَّى تُسْتَأْذَنَ ». قَالُوا يَا رَسُولَ اللَّهِ وَكَيْفَ إِذْنُهَا قَالَ « أَنْ تَسْكُتَ ».

Abu Hurairah narrated that the Messenger of Allah (s.a.w) said: "A previously-married woman should not be married until she has been consulted, and a virgin should not be married until her permission has been sought." They said: "O Messenger of Allah, what is her permission?" He said: "If she remains silent."

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: غیرشادہ شدہ لڑکی سے مشورہ لیے بغیر اس کا نکاح نہ کیا جائے ، اور کنواری کی اجازت لیے بغیر اس کا نکاح نہ کیا جائے ، صحابہ نے پوچھا : یارسول اللہ ﷺ! اس کی اجازت کیسے ہوگی؟ آپﷺنے فرمایا: اس کی خاموشی۔


وَحَدَّثَنِى زُهَيْرُ بْنُ حَرْبٍ حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيلُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ حَدَّثَنَا الْحَجَّاجُ بْنُ أَبِى عُثْمَانَ ح وَحَدَّثَنِى إِبْرَاهِيمُ بْنُ مُوسَى أَخْبَرَنَا عِيسَى - يَعْنِى ابْنَ يُونُسَ - عَنِ الأَوْزَاعِىِّ ح وَحَدَّثَنِى زُهَيْرُ بْنُ حَرْبٍ حَدَّثَنَا حُسَيْنُ بْنُ مُحَمَّدٍ حَدَّثَنَا شَيْبَانُ ح وَحَدَّثَنِى عَمْرٌو النَّاقِدُ وَمُحَمَّدُ بْنُ رَافِعٍ قَالاَ حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّزَّاقِ عَنْ مَعْمَرٍ ح وَحَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ عَبْدِ الرَّحْمَنِ الدَّارِمِىُّ أَخْبَرَنَا يَحْيَى بْنُ حَسَّانَ حَدَّثَنَا مُعَاوِيَةُ كُلُّهُمْ عَنْ يَحْيَى بْنِ أَبِى كَثِيرٍ. بِمِثْلِ مَعْنَى حَدِيثِ هِشَامٍ وَإِسْنَادِهِ. وَاتَّفَقَ لَفْظُ حَدِيثِ هِشَامٍ وَشَيْبَانَ وَمُعَاوِيَةَ بْنِ سَلاَّمٍ فِى هَذَا الْحَدِيثِ.

A Hadith similar to that of Hisham (no. 3473) with its chain was narrated from Ibn Abi Kathir. The wording of the Ahadith of Hisham, Shaiban and Mu'awiyah bin Salam are all the same.

ایک اور سند سے بھی اسی طرح مروی ہے۔


حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ إِدْرِيسَ عَنِ ابْنِ جُرَيْجٍ ح وَحَدَّثَنَا إِسْحَاقُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ وَمُحَمَّدُ بْنُ رَافِعٍ جَمِيعًا عَنْ عَبْدِ الرَّزَّاقِ - وَاللَّفْظُ لاِبْنِ رَافِعٍ - حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّزَّاقِ أَخْبَرَنَا ابْنُ جُرَيْجٍ قَالَ سَمِعْتُ ابْنَ أَبِى مُلَيْكَةَ يَقُولُ قَالَ ذَكْوَانُ مَوْلَى عَائِشَةَ سَمِعْتُ عَائِشَةَ تَقُولُ سَأَلْتُ رَسُولَ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- عَنِ الْجَارِيَةِ يُنْكِحُهَا أَهْلُهَا أَتُسْتَأْمَرُ أَمْ لاَ فَقَالَ لَهَا رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- « نَعَمْ تُسْتَأْمَرُ ». فَقَالَتْ عَائِشَةُ فَقُلْتُ لَهُ فَإِنَّهَا تَسْتَحْيِى. فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- « فَذَلِكَ إِذْنُهَا إِذَا هِىَ سَكَتَتْ ».

Zakwan, the freed slave of 'Aishah, said: "I heard 'Aishah say: 'I asked the Messenger of Allah (s.a.w) about a virgin whose family arranges her marriage: "Should she be consulted or not?" The Messenger of Allah (s.a.w) said to her: "Yes, she should be consulted." 'Aishah said: 'I said to him: "She will feel too shy." The Messenger of Allah (s.a.w) said: "That is her permission, if she remains silent."'

حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ میں نے رسول اللہ ﷺسے پوچھا : جب گھر والے لڑکی کا نکاح کریں تو اس سے اجازت لینی چاہیے یا نہیں ؟ رسول اللہ ﷺنے فرمایا: ہاں ! اجازت لینی چاہیے، حضرت عائشہ نے کہا: میں نے عرض کیا :اس کوشرم آئے گی ، رسول اللہ ﷺنے فرمایا: اس کا خاموش ہونا ہی اس کی اجازت ہے ۔


حَدَّثَنَا سَعِيدُ بْنُ مَنْصُورٍ وَقُتَيْبَةُ بْنُ سَعِيدٍ قَالاَ حَدَّثَنَا مَالِكٌ ح وَحَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ يَحْيَى - وَاللَّفْظُ لَهُ - قَالَ قُلْتُ لِمَالِكٍ حَدَّثَكَ عَبْدُ اللَّهِ بْنُ الْفَضْلِ عَنْ نَافِعِ بْنِ جُبَيْرٍ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ أَنَّ النَّبِىَّ -صلى الله عليه وسلم- قَالَ « الأَيِّمُ أَحَقُّ بِنَفْسِهَا مِنْ وَلِيِّهَا وَالْبِكْرُ تُسْتَأْذَنُ فِى نَفْسِهَا وَإِذْنُهَا صُمَاتُهَا ». قَالَ نَعَمْ.

It was narrated from Ibn 'Abbas that the Prophet (s.a.w) said: "The previously-married woman has more right concerning herself than her guardian does, and the virgin should be asked for permission, and her permission is her silence."

حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سےروایت ہے کہ نبی ﷺنے فرمایا: غیرشادی شدہ عورت ولی کی بہ نسبت اپنے نفس کی زیادہ حقدار ہے ، اور کنواری سے اپنے نفس کے بارے میں اجازت لینی چاہیے، اور اس کی اجازت خاموشی ہے۔


وَحَدَّثَنَا قُتَيْبَةُ بْنُ سَعِيدٍ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ عَنْ زِيَادِ بْنِ سَعْدٍ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ الْفَضْلِ سَمِعَ نَافِعَ بْنَ جُبَيْرٍ يُخْبِرُ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ أَنَّ النَّبِىَّ -صلى الله عليه وسلم- قَالَ « الثَّيِّبُ أَحَقُّ بِنَفْسِهَا مِنْ وَلِيِّهَا وَالْبِكْرُ تُسْتَأْمَرُ وَإِذْنُهَا سُكُوتُهَا ».

It was narrated from Ibn 'Abbas that the Prophet (s.a.w) said: "The previously-married woman has more right concerning herself than her guardian does, and the virgin should be consulted, and her permission is her silence."

حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سےروایت ہے کہ نبی ﷺنے فرمایا: بیوہ اپنے ولی کی بہ نسبت اپنے نفس کا زیادہ حقدار ہے،اور کنواری سے اجازت لی جائے گی اور اس کی اجازت اس کی خاموشی ہے۔


وَحَدَّثَنَا ابْنُ أَبِى عُمَرَ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ بِهَذَا الإِسْنَادِ وَقَالَ « الثَّيِّبُ أَحَقُّ بِنَفْسِهَا مِنْ وَلِيِّهَا وَالْبِكْرُ يَسْتَأْذِنُهَا أَبُوهَا فِى نَفْسِهَا وَإِذْنُهَا صُمَاتُهَا ». وَرُبَّمَا قَالَ « وَصَمْتُهَا إِقْرَارُهَا ».

Sufyan narrated it with this chain and he said: (The Prophet (s.a.w) said:) "The previously-married woman has more right concerning herself than her guardian does, and the father of a virgin should ask her permission, and her permission is her silence." Or perhaps he said: "Her silence is her approval."

اسی سند سے روایت ہے کہ بیوہ اپنے ولی کی بہ نسبت اپنے نفس کا زیادہ حقدار ہے،اور کنواری سے اس کا والد اجازت لے ، اور اس کی اجازت اس کی خاموشی ہے ، اور ایک روایت میں ہے کہ اس کی خاموشی اس کا اقرار ہے۔

Chapter No: 10

بابُ جَوَازِ تَزْوِيجِ الأَبِ الْبِكْرَ الصَّغِيرَةَ

It is permissibile for the father to give the hand of his daughter even when she is not fully grown up

باپ کے لیے چھوٹی کنواری لڑکی کے نکاح کرانے کا جواز

حَدَّثَنَا أَبُو كُرَيْبٍ مُحَمَّدُ بْنُ الْعَلاَءِ حَدَّثَنَا أَبُو أُسَامَةَ ح وَحَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ قَالَ وَجَدْتُ فِى كِتَابِى عَنْ أَبِى أُسَامَةَ عَنْ هِشَامٍ عَنْ أَبِيهِ عَنْ عَائِشَةَ قَالَتْ تَزَوَّجَنِى رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- لِسِتِّ سِنِينَ وَبَنَى بِى وَأَنَا بِنْتُ تِسْعِ سِنِينَ. قَالَتْ فَقَدِمْنَا الْمَدِينَةَ فَوُعِكْتُ شَهْرًا فَوَفَى شَعْرِى جُمَيْمَةً فَأَتَتْنِى أُمُّ رُومَانَ وَأَنَا عَلَى أُرْجُوحَةٍ وَمَعِى صَوَاحِبِى فَصَرَخَتْ بِى فَأَتَيْتُهَا وَمَا أَدْرِى مَا تُرِيدُ بِى فَأَخَذَتْ بِيَدِى فَأَوْقَفَتْنِى عَلَى الْبَابِ. فَقُلْتُ هَهْ هَهْ. حَتَّى ذَهَبَ نَفَسِى فَأَدْخَلَتْنِى بَيْتًا فَإِذَا نِسْوَةٌ مِنَ الأَنْصَارِ فَقُلْنَ عَلَى الْخَيْرِ وَالْبَرَكَةِ وَعَلَى خَيْرِ طَائِرٍ. فَأَسْلَمَتْنِى إِلَيْهِنَّ فَغَسَلْنَ رَأْسِى وَأَصْلَحْنَنِى فَلَمْ يَرُعْنِى إِلاَّ وَرَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- ضُحًى فَأَسْلَمْنَنِى إِلَيْهِ.

It was narrated that 'Aishah said: "The Messenger of Allah (s.a.w) married me when I was six years old and he lived with me when I was nine years old." She said: "We came to Al-Madinah and I fell sick for a month and my hair came down to my neck. Umm Ruman came to me when I was on a swing and some of my friends were with me. She called me loudly and I went to her, and I did not know what she wanted of me. She took me by the hand and made me stand at the door. I said: 'Hah, Hah (as if gasping for breath)' until I had calmed down, then she took me into a house where there were some women of the Ansar who said: 'With good wishes, and blessings, and good fortune.' She handed me over to them and they washed my hair and adorned me, and then suddenly the Messenger of Allah (s.a.w) was there, and they handed me over to him.''

حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ رسول اللہﷺنے میرے ساتھ شادی کی اس وقت میری عمر چھ سال تھی ،اور میری رخصتی اس وقت ہوئی جب میری عمر نو سال تھی۔ جب ہم مدینہ منورہ آئے تو ایک ماہ تک مجھے بخار آتا رہا اور کانوں تک میرے بال رہ گئے ، حضرت ام رومان میرے پاس آئی میں اس وقت اپنی سہیلیوں کے ساتھ جھولے پر تھی، انہوں نے مجھے پکارا ، میں ان کے پاس گئی اور میں نہیں جانتی تھی کہ وہ مجھ سے کیا چاہتی ہے،انہوں نے میرا ہاتھ پکڑ کر مجھے دروازے پر لے جاکر کھڑا کردیا ۔ میں ہاہ ہاہ کہتی رہی حتیٰ کہ میرا سانس رک گیا۔ انہوں نے مجھے ایک گھر میں داخل کردیا جس میں انصار کی کچھ عورتیں بیٹھی تھیں، انہوں نے خیر و برکت کی دعا دی ، حضرت ام رومان (حضرت عائشہ کی والدہ) نے مجھے ان کے سپرد کردیا ، انہوں نے میرا سر دھوکر میرا بناؤ سنگھار کیا ، میں اس وقت ڈرگئی جب چاشت کے وقت رسول اللہ ﷺتشریف لائے ، ان عورتوں نے مجھے آپﷺ کے سپرد کریا۔


وَحَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ يَحْيَى أَخْبَرَنَا أَبُو مُعَاوِيَةَ عَنْ هِشَامِ بْنِ عُرْوَةَ ح وَحَدَّثَنَا ابْنُ نُمَيْرٍ - وَاللَّفْظُ لَهُ - حَدَّثَنَا عَبْدَةُ - هُوَ ابْنُ سُلَيْمَانَ - عَنْ هِشَامٍ عَنْ أَبِيهِ عَنْ عَائِشَةَ قَالَتْ تَزَوَّجَنِى النَّبِىُّ -صلى الله عليه وسلم- وَأَنَا بِنْتُ سِتِّ سِنِينَ وَبَنَى بِى وَأَنَا بِنْتُ تِسْعِ سِنِينَ.

It was narrated that 'Aishah said: "The Prophet (s.a.w) married me when I was six years old, and consummated the marriage with me when I was nine years old."

حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ نبی ﷺنے مجھ سے اس وقت شادی کی جب میری عمر چھ سال تھی، اور میری رخصتی اس وقت ہوئی جب میری عمر نو سال تھی۔


وَحَدَّثَنَا عَبْدُ بْنُ حُمَيْدٍ أَخْبَرَنَا عَبْدُ الرَّزَّاقِ أَخْبَرَنَا مَعْمَرٌ عَنِ الزُّهْرِىِّ عَنْ عُرْوَةَ عَنْ عَائِشَةَ أَنَّ النَّبِىَّ -صلى الله عليه وسلم- تَزَوَّجَهَا وَهْىَ بِنْتُ سَبْعِ سِنِينَ وَزُفَّتْ إِلَيْهِ وَهِىَ بِنْتُ تِسْعِ سِنِينَ وَلُعَبُهَا مَعَهَا وَمَاتَ عَنْهَا وَهِىَ بِنْتُ ثَمَانَ عَشْرَةَ.

It was narrated from 'Aishah that the Prophet (s.a.w) married her when she was seven years old and she was taken to him as a bride when she was nine years old, and she took her dolls with her. He died when she was eighteen years old.

حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ نبی ﷺنے ان سے اس وقت شادی کی جب وہ چھ سال کی تھی، اور ان کی رخصتی اس وقت ہوئی جب ان کی عمر نو سال تھی اور ان کی گڑیاں بھی ان کے ساتھ تھیں اور جب نبی ﷺکی وفات ہوئی اس وقت حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کی عمر اٹھارہ سال تھی۔


وَحَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ يَحْيَى وَإِسْحَاقُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ وَأَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِى شَيْبَةَ وَأَبُو كُرَيْبٍ قَالَ يَحْيَى وَإِسْحَاقُ أَخْبَرَنَا وَقَالَ الآخَرَانِ حَدَّثَنَا أَبُو مُعَاوِيَةَ عَنِ الأَعْمَشِ عَنْ إِبْرَاهِيمَ عَنِ الأَسْوَدِ عَنْ عَائِشَةَ قَالَتْ تَزَوَّجَهَا رَسُولُ اللَّهِ -صلى الله عليه وسلم- وَهْىَ بِنْتُ سِتٍّ وَبَنَى بِهَا وَهْىَ بِنْتُ تِسْعٍ وَمَاتَ عَنْهَا وَهْىَ بِنْتُ ثَمَانَ عَشْرَةَ.

It was narrated from 'Aishah that: "The Messenger of Allah (s.a.w) married her when she was six years old and consummated the marriage with her when she was nine years old, and he died when she was eighteen years old."

حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺنے ان سے اس وقت شادی کی جب وہ چھ سال کی تھی، اور ان کی رخصتی اس وقت ہوئی جب ان کی عمر نو سال تھی اور جب نبی ﷺکی وفات ہوئی اس وقت حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کی عمر اٹھارہ سال تھی۔

123