Sayings of the Messenger احادیثِ رسول اللہ

 
Donation Request

Sahih Al-Bukhari

Book: Call for Prayers (10)    كتاب الأذان

12345Last ›

Chapter No: 21

باب لاَ يَسْعَى إِلَى الصَّلاَةِ، وَلْيَأْتِ بِالسَّكِينَةِ وَالْوَقَارِ

One should not run for As-Salat but present himself with calmness and prestige.

باب: نماز کے لئے دوڑے نہیں اور سہولت سے آئے،

وَقَالَ ‏"‏ مَا أَدْرَكْتُمْ فَصَلُّوا، وَمَا فَاتَكُمْ فَأَتِمُّوا ‏"‏‏.‏ قَالَهُ أَبُو قَتَادَةَ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم‏

"Offer prayer (in congregation) whatever you are able to pray and complete what you have missed." Abu Qatada narrated this from the Prophet (s.a.w).

جتنی نماز پاؤ وہ پڑھ لو اور جتنی جاتی رہے اس کو پورا کر لو، یہ ابو قتادہ نے نبی ﷺ سے نقل کیا(جیسے اوپر گزر چکا)

حَدَّثَنَا آدَمُ، قَالَ حَدَّثَنَا ابْنُ أَبِي ذِئْبٍ، قَالَ حَدَّثَنَا الزُّهْرِيُّ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ الْمُسَيَّبِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم‏.‏ وَعَنِ الزُّهْرِيِّ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ إِذَا سَمِعْتُمُ الإِقَامَةَ فَامْشُوا إِلَى الصَّلاَةِ، وَعَلَيْكُمْ بِالسَّكِينَةِ وَالْوَقَارِ وَلاَ تُسْرِعُوا، فَمَا أَدْرَكْتُمْ فَصَلُّوا وَمَا فَاتَكُمْ فَأَتِمُّوا ‏"

Narrated By Abu Huraira : The Prophet said, "When you hear the Iqama, proceed to offer the prayer with calmness and solemnity and do not make haste. And pray whatever you are able to pray and complete whatever you have missed.

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبیﷺنے فرمایا: جب تم اقامت کی آواز سُنو، تو نماز کےلئے(معمولی چال سے) چل پڑو، اور سکون اور وقار کو لازم پکڑو۔ پھرجتنی نماز ملے وہ پڑھ لو جو جاتی رہے اسکو پورا کرلو۔

Chapter No: 22

باب مَتَى يَقُومُ النَّاسُ إِذَا رَأَوُا الإِمَامَ عِنْدَ الإِقَامَةِ ?

When should the people get up for the Salat if they see the Imam during the Iqama?

باب: نماز کی جب تکبیر ہو لوگ امام کو دیکھ لیں تو کس وقت کھڑے ہوں۔

حَدَّثَنَا مُسْلِمُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ، قَالَ حَدَّثَنَا هِشَامٌ، قَالَ كَتَبَ إِلَىَّ يَحْيَى عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ أَبِي قَتَادَةَ، عَنْ أَبِيهِ، قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ إِذَا أُقِيمَتِ الصَّلاَةُ فَلاَ تَقُومُوا حَتَّى تَرَوْنِي ‏"

Narrated By 'Abdullah bin Abi Qatada : My father said. "Allah's Apostle said, 'If the Iqama is pronounced then do not stand for the prayer till you see me (in front of you).'"

حضرت ابوقتادہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہﷺ نے فرمایا: جب نماز کےلیے اقامت کہی جائے تو اتنی دیر تک کھڑے مت ہوجاؤ جب تک کہ مجھے نہ دیکھو۔

Chapter No: 23

باب لاَ يَسْعَى إِلَى الصَّلاَةِ مُسْتَعْجِلاً، وَلْيَقُمْ بِالسَّكِينَةِ وَالْوَقَارِ

One should not stand for As-Salat hurriedly but with calmness and prestige.

باب: نماز کے لیے جلدی سے نہ اُٹھے بلکہ اطمینان اور سہولت کےساتھ اُٹھے۔

حَدَّثَنَا أَبُو نُعَيْمٍ، قَالَ حَدَّثَنَا شَيْبَانُ، عَنْ يَحْيَى، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ أَبِي قَتَادَةَ، عَنْ أَبِيهِ، قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ إِذَا أُقِيمَتِ الصَّلاَةُ فَلاَ تَقُومُوا حَتَّى تَرَوْنِي وَعَلَيْكُمْ بِالسَّكِينَةِ ‏"‏‏.‏ تَابَعَهُ عَلِيُّ بْنُ الْمُبَارَكِ‏

Narrated By 'Abdullah bin Abi Qatada, My father said, "Allah's Apostle said, 'If the Iqama is pronounced, then do not stand for the prayer till you see me (in front of you) and do it calmly.'"

حضرت ابوقتادہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہﷺ نے فرمایا: جب نماز کےلیے اقامت کہی جائے تو تم اس وقت تک کھڑے نہ ہوا کرو جب تک مجھ کو نہ دیکھو اورسکون کو لازم پکڑو۔

Chapter No: 24

باب هَلْ يَخْرُجُ مِنَ الْمَسْجِدِ لِعِلَّةٍ?

Can one go out of the masjid (after the Adhan) if there is a valid excuse?

باب: کوئی ضرورت ہو تو اذان یا اقامت کے بعدمسجد سے نکل سکتا ہے۔

حَدَّثَنَا عَبْدُ الْعَزِيزِ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ، قَالَ حَدَّثَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ سَعْدٍ، عَنْ صَالِحِ بْنِ كَيْسَانَ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم خَرَجَ وَقَدْ أُقِيمَتِ الصَّلاَةُ وَعُدِّلَتِ الصُّفُوفُ، حَتَّى إِذَا قَامَ فِي مُصَلاَّهُ انْتَظَرْنَا أَنْ يُكَبِّرَ انْصَرَفَ قَالَ ‏"‏ عَلَى مَكَانِكُمْ ‏"‏‏.‏ فَمَكَثْنَا عَلَى هَيْئَتِنَا حَتَّى خَرَجَ إِلَيْنَا يَنْطُفُ رَأْسُهُ مَاءً وَقَدِ اغْتَسَلَ‏

Narrated By Abu Huraira : Allah's Apostle went out (of the mosque) when the Iqama had been pronounced and the rows straightened. The Prophet stood at his Musalla (praying place) and we waited for the Prophet to begin the prayer with Takbir. He left and asked us to remain in our places. We kept on standing till the Prophet returned and the water was trickling from his head for he had taken a bath (of Janaba).

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہﷺ باہرتشریف لائے اور نماز کےلیے اقامت ہوگئی تھی، صفیں برابر ہوچکی تھیں، جب آپﷺ اپنی نماز کی جگہ پرکھڑے ہو ئے ہم انتظارکررہےتھے کہ اب اقامت کہتے ہیں لیکن آپﷺ واپس تشریف لے گئے اور فرمایا: اپنی اپنی جگہ پر ٹھہرے رہو،ہم اسی حال پر ٹھہرے رہے یہاں تک کہ آپﷺ باہر تشریف لائے، آپﷺ کے سر مبارک سے پانی ٹپک رہا تھا، آپﷺ نےغسل کیا تھا۔

Chapter No: 25

باب إِذَا قَالَ الإِمَامُ مَكَانَكُمْ حَتَّى رَجَعَ انْتَظَرُوهُ‏

If the Imam says, "Remain at your places till I return", then wait for him.

باب: اگر امام مقتدیوں سے کہے یہیں ٹھہرے رہوجب تک کہ میں لوٹ کر آؤں تو اس کا انتظار کریں۔

حَدَّثَنَا إِسْحَاقُ، قَالَ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ يُوسُفَ، قَالَ حَدَّثَنَا الأَوْزَاعِيُّ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ بْنِ عَبْدِ الرَّحْمَنِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، قَالَ أُقِيمَتِ الصَّلاَةُ فَسَوَّى النَّاسُ صُفُوفَهُمْ، فَخَرَجَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم فَتَقَدَّمَ وَهْوَ جُنُبٌ ثُمَّ قَالَ ‏"‏ عَلَى مَكَانِكُمْ ‏"‏‏.‏ فَرَجَعَ فَاغْتَسَلَ ثُمَّ خَرَجَ وَرَأْسُهُ يَقْطُرُ مَاءً فَصَلَّى بِهِمْ‏

Narrated By Abu Huraira : Once iqama was pronounced and the people had straightened the rows, Allah's Apostle went forward (to lead the prayer) but he was Junub, so he said, "Remain in your places." And he went out, took a bath and returned with water trickling from his head. Then he led the prayer.

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ اُنہوں نے کہا: نماز کی اقامت ہوئی، لوگو ں نے صفیں برابر کرلیں،تو رسول اللہ ﷺ باہرتشریف لائے ، اور (امامت کےلئے) آگے بڑھے لیکن حالت جنابت میں تھے، پھر ( جب یاد آیا ) تو فرمایا: اپنی اپنی جگہ پر ٹھہرے رہو، پھر آپﷺواپس تشریف لے گئے اور غسل کیا ، پھر باہر تشریف لائے اس حال میں کہ آپﷺکے سر مبارک سے پانی ٹپک رہا تھا ، پھر آپﷺنے لوگوں کو نماز پڑھائی۔

Chapter No: 26

باب قَوْلِ الرَّجُلِ مَا صَلَّيْنَا

The saying of a man to the Prophet (s.a.w), "We have not prayed."

باب: آدمی نبیﷺ سے یوں کہے کہ ہم نے نماز نہیں پڑھی تو اس میں کوئی قباحت نہیں۔

حَدَّثَنَا أَبُو نُعَيْمٍ، قَالَ حَدَّثَنَا شَيْبَانُ، عَنْ يَحْيَى، قَالَ سَمِعْتُ أَبَا سَلَمَةَ، يَقُولُ أَخْبَرَنَا جَابِرُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ، أَنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم جَاءَهُ عُمَرُ بْنُ الْخَطَّابِ يَوْمَ الْخَنْدَقِ فَقَالَ يَا رَسُولَ اللَّهِ، وَاللَّهِ مَا كِدْتُ أَنْ أُصَلِّيَ حَتَّى كَادَتِ الشَّمْسُ تَغْرُبُ، وَذَلِكَ بَعْدَ مَا أَفْطَرَ الصَّائِمُ‏.‏ فَقَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ وَاللَّهِ مَا صَلَّيْتُهَا ‏"‏ فَنَزَلَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم إِلَى بُطْحَانَ وَأَنَا مَعَهُ فَتَوَضَّأَ ثُمَّ صَلَّى ـ يَعْنِي الْعَصْرَ ـ بَعْدَ مَا غَرَبَتِ الشَّمْسُ، ثُمَّ صَلَّى بَعْدَهَا الْمَغْرِبَ‏

Narrated By Jabir bin 'Abdullah : On the day of Al-Khandaq (the trench), 'Umar bin Al-Khattab went to the Prophet and said, "O Allah's Apostle! By Allah, I could not pray (the 'Asr) till the sun had set." 'Umar told this to the Prophet at the time when a fasting person had done Iftar (taken his meals). The Prophet then went to Buthan and I was with him. He performed ablution and offered the 'Asr prayer after the sun had set and then the Maghrib prayer.

حضرت جابر بن عبداللہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ خندق کے روز حضرت عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ نبیﷺکے پاس آئے اور عرض کرنے لگے یا رسو ل اللہ ﷺ اللہ کی قسم! میں تو عصر کی نماز اس وقت تک نہ پڑھ سکا کہ سو رج ڈوبنے ہی کو تھا، یہ حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے اس وقت کہا: جب روزہ کے افطار کا وقت آچکا تھا، نبیﷺ نے فرمایا: اللہ کی قسم! میں نے ابھی تک عصر کی نماز نہیں پڑھی، اس کے بعد آپﷺ بطحان میں اترے، میں بھی آپﷺ کے ساتھ تھا آپﷺ نے وضو کیا، پھر عصر کی نماز پڑھی، جبکہ سورج ڈوب گیا تھا، پھر اس کے بعدمغرب کی نماز پڑھی ۔

Chapter No: 27

باب الإِمَامِ تَعْرِضُ لَهُ الْحَاجَةُ بَعْدَ الإِقَامَةِ

If the Imam is confronted with a problem after the Iqama.

باب: اگر امام کو تکبیر ہو جانے کے بعد کوئی ضرورت پیش آئے ۔

حَدَّثَنَا أَبُو مَعْمَرٍ عَبْدُ اللَّهِ بْنُ عَمْرٍو، قَالَ حَدَّثَنَا عَبْدُ الْوَارِثِ، قَالَ حَدَّثَنَا عَبْدُ الْعَزِيزِ بْنُ صُهَيْبٍ، عَنْ أَنَسٍ، قَالَ أُقِيمَتِ الصَّلاَةُ وَالنَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم يُنَاجِي رَجُلاً فِي جَانِبِ الْمَسْجِدِ، فَمَا قَامَ إِلَى الصَّلاَةِ حَتَّى نَامَ الْقَوْمُ‏

Narrated By Anas : Once the Iqama was pronounced and the Prophet was talking to a man (in a low voice) in a corner of the mosque and he did not lead the prayer till (some of) the people had slept (dozed in a sitting posture).

حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ انہوں نے کہا: نماز (عشاء کی نماز) کی اقامت ہوئی اور نبیﷺ مسجد کے ایک گوشے میں ایک شخص سے سرگوشیاں کرتے رہے، پھر جب آپﷺنماز کےلیے تشریف لائے تو لوگ سورہے تھے۔

Chapter No: 28

باب الْكَلاَمِ إِذَا أُقِيمَتِ الصَّلاَةُ

To talk after the Iqama.

باب: تکبیر ہوتے وقت کسی سے باتیں کرنا۔

حَدَّثَنَا عَيَّاشُ بْنُ الْوَلِيدِ، قَالَ حَدَّثَنَا عَبْدُ الأَعْلَى، قَالَ حَدَّثَنَا حُمَيْدٌ، قَالَ سَأَلْتُ ثَابِتًا الْبُنَانِيَّ عَنِ الرَّجُلِ، يَتَكَلَّمُ بَعْدَ مَا تُقَامُ الصَّلاَةُ فَحَدَّثَنِي عَنْ أَنَسِ بْنِ مَالِكٍ، قَالَ أُقِيمَتِ الصَّلاَةُ فَعَرَضَ لِلنَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم رَجُلٌ فَحَبَسَهُ بَعْدَ مَا أُقِيمَتِ الصَّلاَةُ‏

Narrated By Anas bin Malik : Once Iqama was pronounced a man came to the Prophet and detained him (from the prayer).

حمید طویل نے کہا: میں نے ثا بت بنانی سے پُوچھا ( اگر) کوئی شخص نماز کی تکبیر کے بعدکسی سے باتیں کرے تو کیسا ہے؟ اُنہو ں نے انس بن مالک رضی اللہ عنہ کی حدیث مجھ کو سنائی کہ (آپﷺ کے وقت میں ) نماز کی تکبیر ہوئی، آپﷺ کے سامنے ایک شحص آیا، اس نے اقامت کے بعد آپﷺکو (دیر تک باتوں میں) روکے رکھا۔

Chapter No: 29

باب وُجُوبِ صَلاَةِ الْجَمَاعَةِ

Congregational Salat is obligatory.

باب: جماعت سے نماز پڑھنا فرض ہے

وَقَالَ الْحَسَنُ إِنْ مَنَعَتْهُ أُمُّهُ عَنِ الْعِشَاءِ فِي الْجَمَاعَةِ شَفَقَةً لَمْ يُطِعْهَا‏

Al-Hasan said, "If somebody is forbidden by his mother from going to the congregational Isha prayer because of mercy and pity for him, he should not obey her."

اور امام حسن بصری نے کہا اگر کسی شخص کی ماں اس کو محبت کی راہ سے عشاء کی نماز میں جانے سے روکے تو اس کا کہنا نہ مانے۔

حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ يُوسُفَ، قَالَ أَخْبَرَنَا مَالِكٌ، عَنْ أَبِي الزِّنَادِ، عَنِ الأَعْرَجِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ وَالَّذِي نَفْسِي بِيَدِهِ لَقَدْ هَمَمْتُ أَنْ آمُرَ بِحَطَبٍ فَيُحْطَبَ، ثُمَّ آمُرَ بِالصَّلاَةِ فَيُؤَذَّنَ لَهَا، ثُمَّ آمُرَ رَجُلاً فَيَؤُمَّ النَّاسَ، ثُمَّ أُخَالِفَ إِلَى رِجَالٍ فَأُحَرِّقَ عَلَيْهِمْ بُيُوتَهُمْ، وَالَّذِي نَفْسِي بِيَدِهِ لَوْ يَعْلَمُ أَحَدُهُمْ أَنَّهُ يَجِدُ عَرْقًا سَمِينًا أَوْ مِرْمَاتَيْنِ حَسَنَتَيْنِ لَشَهِدَ الْعِشَاءَ ‏"

Narrated By Abu Huraira : Allah's Apostle said, "By Him in Whose Hand my soul is I was about to order for collecting fire-wood (fuel) and then order Someone to pronounce the Adhan for the prayer and then order someone to lead the prayer then I would go from behind and burn the houses of men who did not present themselves for the (compulsory congregational) prayer. By Him, in Whose Hands my soul is, if anyone of them had known that he would get a bone covered with good meat or two (small) pieces of meat present in between two ribs, he would have turned up for the 'Isha prayer."

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہﷺ نے فرمایا: قسم اس ذات کی جس کے ہاتھ میں میری جان ہے، میں نے یہ ارادہ کیا کہ حکم دوں لکڑیاں جمع کی جا ئیں، پھر نماز کا حکم دوں اُس کی اذان دی جائے، پھر ایک شحص سے کہہ دوں کہ وہ لوگوں کو نماز پڑھائے اور پھر میں ان لوگوں کے پاس جاؤں ( جو جما عت میں حا ضر نہیں ہوتے) ان کو گھروں سمیت جلادوں، قسم! اس کی جس کے ہاتھ میں میری جان ہے، اگر ان لوگوں میں سے جو جماعت میں شریک نہیں ہوئے کسی کومعلوم ہوجائے کہ اس کو گوشت کی ایک موٹی ہڈی ملے گی یا اچھے دوکھر ملیں گے تو عشاء کی جما عت میں ضرور آئے گا۔

Chapter No: 30

باب فَضْلِ صَلاَةِ الْجَمَاعَةِ

Superiority of the congregational Salat.

باب: جماعت سے نماز پڑھنے کی فضیلت

وَكَانَ الأَسْوَدُ إِذَا فَاتَتْهُ الْجَمَاعَةُ ذَهَبَ إِلَى مَسْجِدٍ آخَرَ‏.‏ وَجَاءَ أَنَسٌ إِلَى مَسْجِدٍ قَدْ صُلِّيَ فِيهِ، فَأَذَّنَ وَأَقَامَ وَصَلَّى جَمَاعَةً‏

Whenever Al-Aswad missed the congregational Salat (in a particular masjid), he would go to another masjid. Once, Anas came to a masjid where the Salat was finished. He pronounced the Adhan and then Iqama and offered the Salat in congregation.

اور اسودبن یزید نخعی کو جب جاتے (ایک مسجد میں) جماعت نہ ملتی تو وہ دوسری مسجد کو جاتے اور انس بن مالکؓ ایک مسجد میں آئے جہاں نماز ہو چکی تھی انہوں نے پھر اذان دی اور تکبیر کہی اور جماعت سے نماز پڑھی۔

حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ يُوسُفَ، قَالَ أَخْبَرَنَا مَالِكٌ، عَنْ نَافِعٍ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُمَرَ، أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ صَلاَةُ الْجَمَاعَةِ تَفْضُلُ صَلاَةَ الْفَذِّ بِسَبْعٍ وَعِشْرِينَ دَرَجَةً ‏"‏‏

Narrated By 'Abdullah bin Umar : Allah's Apostle said, "The prayer in congregation is twenty seven times superior to the prayer offered by person alone."

حضرت عبداللہ بن عمر رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ رسول اللہﷺ نے فرمایا: جماعت کی نماز اکیلے شخص کی نماز سے ستا یئس درجے زیادہ فضیلت رکھتی ہے۔


حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ يُوسُفَ، أَخْبَرَنَا اللَّيْثُ، حَدَّثَنِي ابْنُ الْهَادِ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ خَبَّابٍ، عَنْ أَبِي سَعِيدٍ الْخُدْرِيِّ، أَنَّهُ سَمِعَ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم يَقُولُ ‏"‏ صَلاَةُ الْجَمَاعَةِ تَفْضُلُ صَلاَةَ الْفَذِّ بِخَمْسٍ وَعِشْرِينَ دَرَجَةً ‏"‏‏

Narrated By Abu Said Al-Khudri : The Prophet said, "The prayer in congregation is twenty five times superior to the prayer offered by person alone."

حضرت ابو سعید خدری رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ اُنہوں نے نبیﷺ سے سنا آپﷺ فرماتے تھے جما عت کی نماز اکیلے شخص کی نماز پر پچیس درجے زیادہ فضیلت رکھتی ہے۔


حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، قَالَ حَدَّثَنَا عَبْدُ الْوَاحِدِ، قَالَ حَدَّثَنَا الأَعْمَشُ، قَالَ سَمِعْتُ أَبَا صَالِحٍ، يَقُولُ سَمِعْتُ أَبَا هُرَيْرَةَ، يَقُولُ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ صَلاَةُ الرَّجُلِ فِي الْجَمَاعَةِ تُضَعَّفُ عَلَى صَلاَتِهِ فِي بَيْتِهِ وَفِي سُوقِهِ خَمْسًا وَعِشْرِينَ ضِعْفًا، وَذَلِكَ أَنَّهُ إِذَا تَوَضَّأَ فَأَحْسَنَ الْوُضُوءَ، ثُمَّ خَرَجَ إِلَى الْمَسْجِدِ لاَ يُخْرِجُهُ إِلاَّ الصَّلاَةُ، لَمْ يَخْطُ خَطْوَةً إِلاَّ رُفِعَتْ لَهُ بِهَا دَرَجَةٌ، وَحُطَّ عَنْهُ بِهَا خَطِيئَةٌ، فَإِذَا صَلَّى لَمْ تَزَلِ الْمَلاَئِكَةُ تُصَلِّي عَلَيْهِ مَا دَامَ فِي مُصَلاَّهُ اللَّهُمَّ صَلِّ عَلَيْهِ، اللَّهُمَّ ارْحَمْهُ‏.‏ وَلاَ يَزَالُ أَحَدُكُمْ فِي صَلاَةٍ مَا انْتَظَرَ الصَّلاَةَ ‏"

Narrated By Abu Huraira : Allah's Apostle said, "The reward of the prayer offered by a person in congregation is twenty five times greater than that of the prayer offered in one's house or in the market (alone). And this is because if he performs ablution and does it perfectly and then proceeds to the mosque with the sole intention of praying, then for every step he takes towards the mosque, he is upgraded one degree in reward and his one sin is taken off (crossed out) from his accounts (of deeds). When he offers his prayer, the angels keep on asking Allah's Blessings and Allah's forgiveness for him as long as he is (staying) at his Musalla. They say, 'O Allah! Bestow Your blessings upon him, be Merciful and kind to him.' And one is regarded in prayer as long as one is waiting for the prayer."

حضرت ابو ہریرہ ر ضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہﷺنے فرمایا: جماعت کے ساتھ آدمی کا نماز پڑھنا گھر میں یا بازار میں پڑھنے سے پچیس درجہ زیادہ بہتر ہے، یہ اس لیے ہے کہ آدمی جب اچھی طرح وضو کرکے مسجد میں جانے کیلئے نکلتا ہے اور صرف نماز ہی کی نیت سے نکلتا ہے تو جو قدم رکھتا ہے ہر قدم پر اس کا ایک درجہ بلند ہوتا ہے اور ایک گنا ہ معا ف ہوجاتا ہے پھر جب وہ ( مسجد میں پہنچ کر ) نماز پڑھتا ہے تو جب تک اپنی نماز کی جگہ میں رہتا ہے فرشتے اس کےلئے دعا کرتے ر ہتے ہیں، یا اللہ اس پر اپنی رحمت فرما، اس پر رحم کر۔ اور تم میں سے کوئی جب تک نماز کا انتظار کرتا رہے گویا وہ نماز ہی میں ہے۔

12345Last ›